Know Your Rights!
Upcoming SlideShare
Loading in...5
×
 

Know Your Rights!

on

  • 960 views

A more detailed and updated version on Youth Parliament of Pakistan's presentation on Human Rights! :)

A more detailed and updated version on Youth Parliament of Pakistan's presentation on Human Rights! :)

Statistics

Views

Total Views
960
Views on SlideShare
780
Embed Views
180

Actions

Likes
2
Downloads
17
Comments
0

2 Embeds 180

http://www.scoop.it 179
https://twitter.com 1

Accessibility

Categories

Upload Details

Uploaded via as Adobe PDF

Usage Rights

© All Rights Reserved

Report content

Flagged as inappropriate Flag as inappropriate
Flag as inappropriate

Select your reason for flagging this presentation as inappropriate.

Cancel
  • Full Name Full Name Comment goes here.
    Are you sure you want to
    Your message goes here
    Processing…
Post Comment
Edit your comment

Know Your Rights! Know Your Rights! Presentation Transcript

  • Andeel AliDistrict Programs ManagerKarachi – Hyderabad – SukkurYouth Parliament of Pakistan
  • ‫دفعہ ۱ ۔‬‫تمام انسان آزادی اور حقوق و عزت کے اعتبار سے‬ ‫ٔ‬ ‫برابر پیدا ہو یے ہیں۔ انہیں ضمیر اور عقل و دیعت‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫ہو ی ٔی ہے۔ اس لیے انہیں ایک دوسرے کے ساتھ‬ ‫بھایی چارے کا سلوک کرنا چاہیئے۔‬
  • ‫دفعہ ۲ ۔‬ ‫ہر شخص ان تمام آزادیوں اور حقوق کا مستحق ہے جو اس اعالن میں بیان‬ ‫ٔ ٔ‬ ‫کیے گیے ہیں، اور اس حق پر نسل، رنگ، جنس، زبان، مذہب اور سیاسی تفر یق‬ ‫کا یا کسی قسم کے عقیدے، قوم، معاشرے، دولت یا خاندانی حیثیت وغیرہ‬ ‫ٔ‬ ‫کا کو یی اثر نہ پڑے گا۔‬ ‫اس کے عالوہ جس عالقے یا ملک سے جو شخص تعلق رکھتا ہے اس کی‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫سیاسی کیفیت دایرہ اختیار یا بین االقوامی حیثیت کی بنا پر اس سے کو یی‬ ‫ٔ‬‫امتیازی سلوک نہیں کیا جایے گا۔ چاہے وہ ملک یا عالقہ آزاد ہو یا تولیتی ہو یا‬‫غیر مختار ہو یا سیاسی اقتدار کے لحاظ سے کسی دوسری بندش کا پابند ہو۔‬
  • ‫دفعہ ۳ ۔‬‫ہر شخص کو اپنی جان، آزادی اور‬ ‫ذاتی تحفظ کا حق ہے۔‬
  • ‫دفعہ ۴ ۔‬ ‫ٔ‬‫کو یی شخص غالم یا لونڈی بنا کر نہ رکھا‬‫جا سکے گا۔ غالمی اور بردہ فروشی، چاہے اس‬ ‫ٔ‬ ‫کی کو یی شکل بھی ہو، ممنوع قرار دی‬ ‫ٔ‬ ‫جایے گی۔‬
  • ‫ّ‬ ‫دفعہ ۵ ۔‬ ‫کسی شخص کو جسمانی اذیت یا‬‫ظالمانہ، انسایت سوز، یا ذلیل سلوک یا‬ ‫ٔ‬ ‫سزا نہیں دی جایے گی۔‬
  • ‫دفعہ ۶ ۔‬‫ہر شخص کا حق ہے کہ ہر مقام پر‬‫قانون اس کی شخصیت کو تسلیم‬ ‫کرے۔‬
  • ‫دفعہ ۷ ۔‬ ‫قانون کی نظر میں سب برابر ہیں اور سب بغیر کسی‬ ‫تفر یق کے قانون کے اندر امان پانے کے ٔبرابر حقدار ہیں۔‬ ‫ٔ‬ ‫اس اعالن کے ٔخالف جو تفر یق کی جایے یا تفر یق کے لیے‬‫ترغیب دی جایے، اس سے سب برابر کے بچاؤ کے حقدار ہیں۔‬
  • ‫دفعہ ۸ ۔‬ ‫ہر شخص کو ان افعال کے خالف جو اس دستور یا‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬‫قانون میں دیے ہو یے بنیادی حقوق کو تلف کرتے ہوں،‬ ‫ٔ‬ ‫ّ‬‫بااختیار قومی عدالتوں سے موثر طر یقے پر چارہ جو یی‬ ‫کرنے کا پورا حق ہے۔‬
  • ‫دفعہ ۹ ۔‬ ‫کسی شخص کو محض حاکم کی‬‫مرضی ٔپر گرفتار، نظربند، یا جالوطن نہیں‬ ‫کیا جایے گا۔‬
  • ‫دفعہ ۰۱ ۔‬ ‫ہر ایک شخص کو یکساں طور پر حق حاصل ہے کہ‬ ‫ٔ‬‫اس کے حقوق و فرایض کا تعین یا اس کے خالف کسی‬ ‫ٔ‬‫عاید کردہ جرم کے بارے میں مقدمہ کی سماعت آزاد‬‫اور غیر جانب دار عدالت کے کھلے اجالس میں منصفانہ‬ ‫طر یقے پر ہو۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۱۱ ۔‬ ‫(۱) ایسے ہر شخص کو جس پر کو یی فوجداری کا الزام عاید کیا جایے، بے‬ ‫ٔ‬‫گناہ شمار کیے جانے کا حق ہے ٔتاوقتیکہ اس پر کھلی عدالت میں قانون‬ ‫ٔ‬ ‫کے مطابق جرم ثابت نہ ہو جایے اور اسے اپنی صفایی پیش کرنے کا پورا‬ ‫موقع نہ دیا جا چکا ہو۔‬ ‫(۲) کسی شخص کو کسی ایسے فعل یا فروگذاشت کی بنا پر جو‬‫ارتکاب کے وقت قومی یا بین االقوامی قانون کے اندر تعز یری جرم شمار‬ ‫ٔ‬ ‫نہیں کیا جاتا تھا، کسی تعز یری جرم میں ماخوذ نہیں کیا جایے گا۔‬
  • ‫دفعہ ۲۱ ۔‬‫کسی شخص کی نجی زندگی، خانگی زندگی، گھربار،‬ ‫ٔ‬ ‫خط و کتابت میں من مانے طر یقے پر مداخلت نہ کی ٔجایے‬ ‫گی اور نہ ہی اس کی عزت اور نیک نامی پر حملے کیے‬ ‫ٔ‬ ‫جاییں گے۔ ہر شخص کا حق ہے کہ قانون اسے حملے یا‬ ‫مداخلت سے محفوظ رکھے۔‬
  • ‫دفعہ ۳۱ ۔‬‫( ۱) ہر شخص کا حق ہے کہ اسے ہر ر یاست کی حدود کے اندر‬ ‫ٔ‬ ‫نقل و حرکت کرنے اور سکونت اختیار کرنے کی آزادی ہو۔‬‫(۲) ہر شخص کو اس بات کا حق ہے کہ وہ ملک سے چال جایے‬ ‫چاہے یہ ملک اس کا اپنا ہو۔ اور اسی طرح اسے ملک میں‬ ‫واپس آجانے کا بھی حق ہے۔‬
  • ‫دفعہ ۴۱ ۔‬ ‫(۱) ہر شخص کو ایذا رسانی سے دوسرے ملکوں میں پناہ‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫ڈھونڈنے، اور پناہ مل جایے تو اس سے فایدہ اٹھانے کا حق ہے۔‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫(۲) یہ حق ان عدالتی کاررواییوں سے بچنے کے لیے استعمال میں‬ ‫ٔ‬ ‫ً‬‫نہیں الیا جاسکتا جو خالصا غیر سیاسی جرایم یا ایسے افعال کی‬ ‫ُ‬‫وجہ سے عمل میں آتی ہیں جو اقوام متحدہ کے مقاصد اور اصول‬ ‫ِ‬ ‫کے خالف ہیں۔‬
  • ‫دفعہ ۵۱ ۔‬ ‫(۱) ہر شخص کو قومیت کا حق ہے۔‬ ‫ٔ‬ ‫(۲) کو یی شخص محض حاکم کی مرضی پر اپنی‬ ‫ٔ‬‫قومیت سے محروم نہیں کیا جایے گا اور اس کو قومیت‬ ‫ٔ‬ ‫تبدیل کرنے کا حق دینے سے انکار نہ کیا جایے گا۔‬
  • ‫دفعہ ۶۱ ۔‬‫(۱) بالغ مردوں اور عورتوں کؤ بغیر ٔکسی ایسی پابندی کے جو نسل‬ ‫قومیت یا مذہب کی بنا پر لگایی جایے شادی بیاہ کرنے اور گھر‬ ‫بسانے کا حق ہے۔ مردوں اور عورتوں کو نکاح، ازدواجی زندگی اور‬ ‫نکاح فسخ کرنے کے معاملہ میں برابر کے حقوق حاصل ہیں۔‬ ‫(۲) نکاح فر یقین کی پوری اور آزاد رضامندی سے ہوگا۔‬ ‫ٔ‬ ‫(۳) خاندان، معاشرے کی فطری اور بنیادی اکایی ہے۔ اور وہ‬ ‫معاشرے اور ر یاست دونوں کی طرف سے حفاظت کا حق دار ہے۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۷۱ ۔‬ ‫(۱) ہر انسان کو تنہا یا دوسروں سے مل کر جایداد‬ ‫ٔ‬ ‫رکھنے کا حق ہے۔‬‫(۲) کسی شخص کو زبردستی اس کی جایداد سے‬ ‫ٔ‬ ‫محروم نہیں کیا جایے گا۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۸۱ ۔‬‫ہر انسان کو آزادی فکر، آزادی ضمیر اور آزادی مذہب کا‬ ‫پورا حق ہے۔ اس حق میں مذہب یا عقیدے کو تبدیل کرنے‬ ‫اور پبلک میں یا نجی طور پر، تنہا یا دوسروں کے ساتھ مل‬ ‫جل کر عقیدے کی تبلیغ، عمل، عبادت اور مذہبی رسمیں‬ ‫پوری کرنے کی آزادی بھی شامل ہے۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۹۱ ۔‬ ‫ہر شخص کو اپنی رایے رکھنے اور اظہار رایے کی آزادی کا‬ ‫ِ‬ ‫حق حاصل ہے۔ اس حقٔ میں یہ امر بھی شامل ہے کہ وہ‬ ‫ٔ‬‫آزادی کے ساتھ اپنی رایے قایم کرے اور جس ذر یعے سے چاہے‬ ‫ٔ‬ ‫بغیر ملکی سرحدوں کا خیال کیے علم اور خیاالت کی‬ ‫تالش کرے۔ انہیں حاصل کرے اور ان کی تبلیغ کرے۔‬
  • ‫ُ‬ ‫دفعہ ۰۲ ۔‬ ‫(۱) ہر شخص کو پرامن طر یقے پر ملنے جلنے اور‬ ‫ٔ‬ ‫انجمنیں قایم کرنے کی آزادی کا حق ہے۔‬‫( ٔ۲) کسی شخص کو کسی انجمن میں شامل ہونے‬ ‫لیے مجبور نہیں کیا جاسکتا۔‬
  • ‫دفعہ ۱۲ ۔‬ ‫۱ ہر شخص کو اپنے ملک کی حکومت میں براہ راست یا آزادانہ طور پر‬ ‫ِ‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫منتخب کیے ہو یے نمایندوں کے ذر یعے حصہ لینے کا حق ہے۔‬‫۲ ہر شخص کو اپنے ملک میں سرکاری مالزمت حاصل کرنے کا برابر حق ہے۔‬ ‫ً‬ ‫۳ عوام کی مرضی حکومت کے اقتدار کی بنیاد ہوگی۔ یہ مرضی وقتا‬ ‫ٔ‬ ‫ً‬ ‫فوقتا ایسے حقیقی انتخابات کے ذر یعے ظاہر کی جایے گی جو عام اور مساوی‬ ‫ٔ‬ ‫رایے دہندگی سے ہوں گے اور جو خفیہ ووٹ یا اس کے مساوی کسی دوسرے‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫آزادانہ طر یق رایے دہندگی کے مطابق عمل میں آییں گے۔‬ ‫ِ‬
  • ‫دفعہ ۲۲ ۔‬ ‫معاشرے کے رکن کی حیثیت سے ہر شخص کو معاشرتی‬ ‫تحفظ کا حقٔ حاصل ہے اور یہ حق بھی کہ وہ ملک کے‬‫نظام اور وسایل کے مطابق قومی کوشش اور بین االقوامی‬ ‫تعاون سے ایسے اقتصادی، معاشرتی اور ثقافتی حقوق کو‬ ‫حاصل کرے، جو اس کی عزت اور شخصیت کے آزاددانہ‬ ‫ٔ‬ ‫نشوونما کے لیے الزم ہیں۔‬
  • ‫دفعہ ۳۲ ۔‬‫۱ ہر ٔشخص کو کام کاج، روزگار کے آزادانہ انتخاب کام کاج کی مناسب و معقول‬ ‫ٔ‬ ‫شرایط اور بے روزگاری کے خالف تحفظ کا حق ہے۔‬‫۲ ہر شخص کو کسی تفر یق کے بغیر مساوی کام کے لیے مساوی معاوضے کا حق ہے‬‫۳ ہر شخص جو کام کرتا ہے وہ ایسے مناسب و معقول مشاہرے کا حق رکھتا ہے جو‬ ‫ٔ‬ ‫خود اس کے اور اس کے اہل و عیال کے لیے باعزت زندگی کا ضامن ہو۔ اور جس میں‬ ‫اگر ضروری ہو تو معاشرتی تحفظ کۓ دوسرے ذر یعوں سے ٔاضافہ کیا جاسکے۔‬ ‫۴ ہر شخص کو اپنے مفاد کے بچاؤ کے لیے تجارتی انجمنیں قایم کرنے اور اس میں‬ ‫شر یک ہونے کا حق حاصل ہے۔‬
  • ‫دفعہ ۴۲ ۔‬‫ہر شخص کو آرام اور فرصت کا حق ہے جس‬ ‫میں کام کے گھنٹوں کی حدبندی اور‬ ‫تنخواہ کے عالوہ مقررہ وقفوں کے ساتھ‬ ‫تعطیالت بھی شامل ہیں۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۵۲ ۔‬ ‫(۱) ہر شخص کو اپنی اور اپنے اہل و عیال کی صحت اور فالح و بہبود کے لیے‬ ‫مناسب معیار زندگی کا حق ہے جس میں خوراک، پوشاک، مکان اور عالج‬‫کی سہولتیں اور دوسری ضروری معاشرتی مراعات شامل ہیں اور بے روزگاری‬ ‫بیماری، معذوری، بیوگی، بڑھاپا یا ان حاالت میں روزگار سے محرومی جو اس‬ ‫ٔ‬ ‫کے قبضہ قدرت سے باہر ہوں، کے خالف تحفظ کا حق حاصل ہے۔‬ ‫ّ‬ ‫ّ‬‫(۲) زچہ اور بچ ٔہ خاص توجہ اور امداد کے حق دار ہیں۔ تمام بچے خواہ وہ شادی‬ ‫سے پہلے پیدا ہو یے ہوں یا شادی کے بعد معاشرتی تحفظ سے یکساں طور پر‬ ‫مستفید ہوں گے۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۶۲ ۔‬ ‫۱ ہر شخص کو تعلیم کا حق ہے۔ تعلیم مفت ہوگی، کم سے کم ابتدایی اور بنیادی‬ ‫ّ‬ ‫ٔ‬ ‫درجوں میں۔ ابتدایی تعلیم جبری ہوگی۔ فنی اور پیشہ ورانہ تعلیم حاصل کرنے کا عام‬ ‫ٔ‬ ‫ٰ‬ ‫ٔ‬‫انتظام کیا جایے گا اور لیاقت کی بنا پر اعلی تعلیم حاصل کرنا سب کے لیے مساوی طور پر‬ ‫ممکن ہوگا۔‬ ‫۲ تعلیم کا مقصد انسانی شخصیت کی پوری نشوونما ہوگا۔ اور وہ انسانی حقوق اور‬ ‫بنیادی آزادیوں کے احترام میں اضافہ کرنے کا ذر یعہ ہوگی وہ تمام قوموں اور نسلی یا‬‫مذہبی گروہوں کے درمیان باہمی مفاہمت، رواداری اور دوستی کو ترقی دے گی اور امن‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫کو برقرار رکھنے کے لیے اقواہم متحدہ کی سرگرمیوں کو آگے بڑھایے گی۔‬ ‫ّ‬ ‫۳ والدین کو اس بات کے انتخاب کا اولین حق ہے کہ ان کے بچوں کو کس قسم کی‬ ‫ٔ‬ ‫تعلیم دی جایے گی۔‬
  • ‫ّ‬ ‫دفعہ ۷۲‬‫(۱) ہر شخص کو قوم کی ثقافتی زندگی میں آزادانہ حصہ ٔلینے،‬ ‫ٔ‬ ‫ادبیات سے مستفید ہونے اور ساینس کی ترقی اور اس کے فواید‬ ‫ّ‬ ‫ُ‬ ‫میں شرکت کا حق حاصل ہے۔‬ ‫(۲) ہر شخص کو حق حاصل ہے کہ اسٔ کے ان اخالقی اور مادی‬ ‫ٔ‬ ‫مفاد کا بچاؤ کیا جایے جو اسے ایسی ساینسی، علمی یا ادبی‬ ‫تصنیف سے جس کا وہ مصنف ہے، حاصل ہوتے ہیں۔‬
  • ‫دفعہ ۸۲ ۔‬‫ہر شخص ایسے معاشرتی اور بین االقوامی نظام میں‬ ‫شامل ہونے کا حق دار ہے جس میں وہ تمام آزادیاں‬ ‫اور حقوقٔ حاصل ہوسکیں جو اس اعالن میں پیش‬‫ٔ‬ ‫کر دیے گیے ہیں۔‬
  • ‫دفعہ ۰۳ ۔‬ ‫۱ ہر شخص پر معاشرے کے حق ہیں۔ کیونکہ معاشرے میں رہ کر ہی اس کی‬ ‫شخصیت کی آزادانہ اور پوری نشوونما ممکن ہے۔‬ ‫ٔ‬‫۲ اپنی آزادیوں اور حقوق سے فایدہ اٹھانے میں ہر شخص صرف ایسی حدود کا پابند‬‫ہوگا جو دوسروں کی آزادیوں اور حقوق کو تسلیم کرانے اور ان کا احترام کرانے‬ ‫ّ‬ ‫کی غرض سے یا جمہوری نظام میں اخالق، امن عامہ اور عام فالح و بہبود کے‬ ‫ٔ ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫ٔ‬ ‫مناسب لوازمات کو پورا کرنے کے لیے قانون کی طرف سے عاید کیے گیے ہیں۔‬ ‫۳ یہ حقوق اور آزادیاں کسی حالت میں بھی اقوام متحدہ کے مقاصد اور اصول‬ ‫ِ‬ ‫ٔ‬ ‫کسے خالف عمل میں نہیں الیی جاسکتیں۔‬
  • ‫ٔ‬ ‫دفعہ ۰۳ ۔‬‫اس اعالن کی کسی چیز سے کو یی ایسی بات مراد نہیں لی‬‫جاسکتی جس سے کسی ملک، گروہ یا شخص کو کسی‬ ‫ایسی سرگرمیوں میں مصروف ہونے یا کسی ایسے کام‬ ‫کو انجام دینے کا حق پید اہو جس کا منشا ٔان حقوق اور‬ ‫آزادیوں کی تخر یب ہو جو یہاں پیش کی گیی ہیں۔‬
  • Values inherent toall human beings nationality place of residenceregardless of our: national or ethnic gender color origin or any other religion language status.We are all equally entitled to Human Rights are all our human rights without interrelated, interdependent discrimination. and indivisible.
  • The Golden Rule!“One should treat others as one would like others to treat oneself.” Found in philosophies of The most essential basis for ancient Babylon, Egypt, the modern concept of Persia, India, Greece, Judea, human rights and China ‫خطبہ حجتہ الوداع‬‎‫آنحضرت صلى هللا عليه وسلم کا‬
  • Magna Carta is an English It was the most significant early influence on charter the extensive historical process that led to theoriginally issued rule of constitutional law today. in 1215. Magna Carta influenced the development of the common law and many constitutional documents, such as the United States Constitution and Bill of Rights.
  • In 1950, on the second anniversary of the adoption of the Universal Declaration of Human Rights,students at the UN International Nursery School in New York viewed a poster of the historicdocument. After adopting it on December 10, 1948, the UN General Assembly had called uponall Member States to publicize the text of the Declaration and "to cause it to be disseminated,displayed, read and expounded principally in schools and other educational institutions, withoutdistinction based on the political status of countries or territories." (UN Photo)
  • Top row, from left: Dr. Charles Malik (Lebanon) Alexandre Bogomolov (USSR) Dr. Peng-chun Chang (China) Middle row, from left: René Cassin (France) Eleanor Roosevelt (US)Charles Dukes (United Kingdom) Bottom row, from left: William Hodgson (Australia) Hernan Santa Cruz (Chile) John P. Humphrey (Canada)
  • The International Covenant on Civil and Political Rights (ICCPR) and the International Covenant on Economic, Social and Cultural Rights (ICESCR) were adopted by the United Nations (on December 16, 1966, and in force from March 23, 1976.) Convention on the Convention on the Elimination of All Forms of Elimination of All Forms ofRacial Discrimination (CERD) Discrimination Against (adopted 1966, entry into Women (CEDAW) (adopted force: 1969) 1979, entry into force: 1981)
  • United Nations Convention Convention on the Rights of Against Torture (CAT) the Child (CRC) (adopted(adopted 1984, entry into 1989, entry into force: 1989) force: 1984) International Convention on the Protection of the Rights Convention on the Rights of of All Migrant Workers and Persons with Disabilities Members of their Families(CRPD) (adopted 2006, entry (ICRMW or more often into force: 2008) MWC) (adopted 1990, entry into force: 2003)
  • PART II Fundamental Rights andPrinciples of Policy
  • Key Concepts (rights, freedom, responsibility, universality, interdependence, justice ,equality, human dignity) Civil & Political Historical Events Social Changes Rights International International and Instruments for Social and Protection & National Units Economic RightsImplementation of HR Protecting HR
  • Commitment Human Sense of to Personal Dignity & SelfResponsibility Development Worth Appreciation Sense of Empathy & & Acceptance Justice Solidarity for Diversity
  • Active Listening Communication Skills Advocacy Skills Critical ThinkingConflict Resolution Positive Participation Organize Social Groups
  • Know Your Rights! 1st National Project Steering Committee meeting:http://goo.gl/jZz3CCOMPASS Manual: http://eycb.coe.int/compass/en/contents.htmlHuman Rights: http://goo.gl/mCrSzhttp://unicode.org/udhr/d/udhr_urd.htmlhttp://en.wikipedia.org/wiki/Human_rightshttp://en.wikipedia.org/wiki/History_of_human_rightshttp://en.wikipedia.org/wiki/Geneva_Conventionshttp://en.wikipedia.org/wiki/Hague_Conventions_of_1899_and_1907Constitution of Pakistan: http://www.mediafire.com/?tzbe8xsdqhda4me
  •  
  •  +92-32-12537250andeel.ali@youthparliament.org.pk pk.linkedin.com/in/andeelfb.com/YouthParliamentofPakistan