‫لطیفہ نمبر 11‬          ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬                  ‫‪sulemansubhani @ 11:00 am‬‬         ...
‫تھی کہ میں نے عقد ثانی کیا ہے اور یہ شرع میں‬       ‫نا جائز نہیں ہے ، بس بات ختم ہو جاتی ۔‬   ‫لیکن مولنا کبھی تو فرماتے...
‫کے علوہ اور بھی بہت سی مصلحتیں لکھیں‬ ‫ہیں جن سے معلوم ہوتا ہے کہ مولنا تھانوی نے‬‫عقد ثانی کیا کیا ، سلوک و معرفت اور طر...
‫یہ مذکورہ بال امور ’’ شرک فی الرسالۃ’’ ہیں ۔ فاضل‬                       ‫دیوبند مولنا اکبر آبادی کا جواب!‬  ‫منجملہ انھی...
‫فی اللہ اور کفر ہے اسی طرح آنخضرت صلی اللہ علیہ‬     ‫وآلہ وسلم کے اوصاف و کمالت نبوت میں کسی کو‬‫شریک جاننا شرک فی الرسا...
‫لطیفہ نمبر 9‬            ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬                     ‫‪sulemansubhani @ 10:57 am‬‬     ...
‫‪Leave a Comment‬‬                                       ‫لطیفہ نمبر 8‬            ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم...
‫اس کے لئے روایات کی ضرورت ہے اور وہ روایات مجھ کو‬    ‫مستحفر نہیں۔ ) اشرف السوانح حصہ اول ص 67 (‬‫یہ حضرت وال وہی ہیں جن...
‫ان کو صحابہ و تابعین کیا معنٰی انبیاء سے بھی جا ملیا‬                                                    ‫ہے۔‬  ‫دلداگان ...
‫وہ اپنے معاملت میں تاویل و توجیہہ و اغماض‬                            ‫ومسامحت سے کام لیتے تھے !‬ ‫انھوں نے اپنے ایک مرید...
‫محبت ہے اور یہ سب اسی کا نتیجہ و ثمرہ ہے ’’ ) برہان‬                    ‫دہلی فروری 2591 ء صفحہ 701 (‬                   ...
‫ایمان ہے اس کا انکار الحاد و زندقہ ہے اور دیدار حق‬   ‫تعالٰی آخرت میں بے کیف و بے جہت ہو گا ۔ مخالف اس‬ ‫عقیدے کا بد دین...
‫حقیقہ است اگر صاحب آں اعتقادات‬               ‫مذکورہ را از جنس عقائد دینیہ می شمارد‬‫جب یہ راز فاش ہو گیا کہ اکابر دیوبن...
‫’’پھر یہ کہ آپ کی ذات مقدّسہ پر علم غیب کا حکم کیا‬‫جانا اگر بہ قول زید صحیح ہو تو دریافت طلب یہ امر ہے کہ‬  ‫اس غیب سے م...
‫لگا کر صحیح اور درست ثابت کرنے میں لگا ہوا ہے اور‬‫دوسرا گروہ اسی شدومد کے ساتھ تردید میں مصروف ہے۔‬     ‫چناچہ بات بڑھتی...
‫اب دیکھئیے مولنا مرتضٰی حسن صاحب در بھنگی کیا‬                                               ‫فرماتے ہیں !‬  ‫واضح ہو کہ ...
‫موجب کفر ہوتا ۔‬‫اگر بالفرض اس عبارت کا وہ مطلب ہوا جو مولوی سردار‬  ‫احمد صاحب بیان کر رہے ہیں جب تو ہمارے نزدیک بھی‬   ...
‫طور پر برآمد ہو گیا کہ‬ ‫مولنا مرتضٰی حسن اور مولنا نعمانی دونوں کے دونوں‬          ‫مولنا مدنی کی تاویل کی روشنی میں کاف...
‫ٌلطیفہ نمبر 3 :-‬‫سوال:- کیا فرماتے ہیں علماء دین اس مسئلہ میں کہ ایک‬   ‫میلد خواں نے مندرجہ ذیل شعر محفل مولود میں نبی‬...
‫یہ اس کا عقیدہ ہے تو کفر ہے۔ دیندار آدمی اس کے سننے‬         ‫سے بھی احتیاط کرنا چاہئیے۔ سعید احمد سنبھل‬  ‫4:- اس شعر کا...
‫چیز کو فرض کر رکھا ہے۔ شرط کا وجود محال ہے اسلئے‬   ‫دوسرا مصرعہ جو بطور جزا کے ہے۔ اس کا مترتب ہونا‬ ‫بھی محال ہے مگر شع...
‫والخیرات’’ کو ہی کافر و فاسق قرار دیا ہے۔ ملحظہ ہو‬                                       ‫شعر مع حوالہ ۔۔،‬         ‫جو ...
‫6:- مولنا کا یہ شعر حد شرع سے باہر ، غلو اور قبیح ہے۔ )‬               ‫عالم دیوبند مفتی محمد کفایت اللہ، دہلی(‬ ‫7:- مول...
‫سرخیاں !‬   ‫اسی فتوے کے بارے میں جناب ابو محمد امام الدین رام‬  ‫نگری اپنے ماہنامہ انوار اسلم ص 7 تحریر فرماتے ہیں :-‬  ...
‫اگر کوئی عالم دین ’’ فارسلنا الیھا روحنا فتمثل لھا بشرا‬‫سویا کی تشریح اور اس سے درج ذیل نتائج اخذ کرتے ہوئے‬            ...
‫لد سر لبیہ(‬                                            ‫اقتباس 4:-‬  ‫بہرحال اگر خاتمیت میں حضرت مسیح علیہ السلم کو‬‫حضو...
‫گئے ۔ وہ شبیہہ محمدی نہ تھی ، آنحضرت صلے اللہ علیہ‬ ‫وآلہ وسلم اور صحابہ نے کبھی یہ نہ سمجھا کہ ان مثل‬   ‫عیسٰی عند اللہ...
‫چاہئے۔ جب تک توبہ نہ کرے۔ واللہ تعالٰی اعلم‬                ‫سیّد مہدی حسن مفتی دارالعلوم دیوبند‬‫اب سنئے کہ عبارت کس کتا...
‫مولنا کے افکار و نظریات کو دیکھ کر ہمیں بڑی وحشت‬‫ہوئی۔ معلوم نہیں ان کو کیا ہو گیا ہے، اور اسلم و مغربی‬ ‫تہذیب میں مفاہ...
‫3:قاری صاحب موصوف ملحد و بے دین ہیں۔‬‫4:عیسائیت اور قادیانیت کی روح ان کے جسم میں سرایت‬                                 ...
‫لگے۔ آج ساتواں سال ہے ۔ یعنی 2691ء میں قاری صاحب‬  ‫ملحد و بے دین قرار دیئے گئے اور آج 8691ء۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہے ۔‬ ‫پھر بھی ن...
‫اردو اسلمی پاکستانی معلوماتی بلگ‬                            ‫7002 ,51 ‪January‬‬                 ‫مزا ر ِ ” بے چارہ و بے...
‫علمائے دیوبند بشمول جناب اشرفعلی تھانوی‬      ‫صاحب کا پختہ قبر کی تعمیر اور مزار پر‬‫حاضری اور ایصا ل ِ ثواب کے حوالے سے...
‫) ج و برطانوی دو ر ِ حکومت میں انگریزوں کے‬   ‫سی۔آئی۔ڈی ایجنٹ تھ ے ( ، ان کی اہلیہ، ان کے‬      ‫“ خلیف ہ ” اور سابق مہت...
‫مٹی کے ڈھیر کے علوہ کچھ اور بھی بچا ہو۔‬  ‫بہر حال اپنی جھینپ مٹانے کے لئے نجم الحسن‬   ‫تھانوی صاحب نے اس عمل کو “ مزا ر...
‫) ح و ال ہ کے لئے ملحظہ ہ و : تبلیغی جماعت۔‬  ‫مصنفہ علمہ ارشد القادر ی ( ۔ امت محمدیہ کے‬      ‫ان نہایت مقدس بزرگ و برت...
‫احتجاج کرنا چاہئے۔ اس سلسلے میں انہی کے ہم‬‫مسلک ڈاکٹر سلمان شاہجہانپوری کا حوالہ یہاں‬‫بطور گھر کی گواہی کافی ہوگا کہ ڈا...
‫کا حصہ ہے اور پاکستان کا قیام ان کی کوششوں‬   ‫کا رہی ن ِ م ن ّت ہے ۔ ” ) ت ح قیق ی مقالہ “ مولنا عبید‬‫اللہ سندھی کا دیو...
‫“ مزا ر ” تھانوی کے مجاور نے مزید ستم یہ ڈھایا‬‫ہے کہ اب جبکہ وہاں قبروں کی جگہ بقول ان کے‬ ‫صرف گڑھے رہ گئے ہیں تو وہ ان...
‫انداز میں چہل قدمی کرتے ہوئے اپنے اپنے‬                         ‫“حجروں” میں چلے گئے۔‬‫ہم اہ ل ِ سنت و جماعت تو ابتداءہی ...
‫شیخ محمد بن عبد الوہاب نجدی 3071 ھ 5111‬‫ع تا 2971 ھ 2061 ع بارھویں صدی کی ابتداء‬  ‫میں پیداہوئے ، ان کی شخصیت نے ملت اس...
‫کو جائز قرار دیا۔‬‫شیخ نجدی نے جس نئے دین کی طرف لوگوں کو‬‫دعوت دی ، وہ عرف عام میں وہابیت کے نام سے‬     ‫مشہور ہوا اور ...
‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬                 ‫‪sulemansubhani @ 12:11 am‬‬         ‫بسم اللہ الرح م ٰن لرحیم‬...
‫عل م ِ غیبی میں مجانین و بہائم کا شمول‬    ‫کفرآمیز جنوں زا ہے ج َہالت تیری‬‫یا د ِ خ ُر سےہو نمازوں میں خیال ا ُنکا ب ُر...
‫ا ُسی مشرک کی ہےتصنیف کتا ب ُ التوحید‬   ‫جس کےہر فقرہ پہ ہے م ُہ ر ِ صداقت تیری‬‫ترجمہ اس کاہوا دھکۃ الیما ن ) تقویۃ الی...
‫ابھی گھبرا نہیں باقی ہےحکایت تیری‬   ‫نکلیں گےدین سےیوں جیسےنشانہ سےتیر‬    ‫آج اس تیر کی نخچر پہ ہےسنگت تیری‬    ‫اپنی ح...
‫جو ت ِرےواسطےتکلیفیں اٹھائیں کیا کیا‬   ‫اپنےآرام سےپیاری جنہیں صورت تیری‬ ‫جاگ کر راتیں عبادت میں جنہوں نےکاٹیں‬  ‫کس لئ...
‫‪Leave a Comment‬‬                         ‫6002 ,02 ‪November‬‬  ‫حسام الحرمین کی حقانیت و صداقت و ثقاہت‬    ‫‪ ,Filed u...
‫ختم نبوت کےخلف اکابر و مشاہر علماءو‬‫فقہاءعرب وعجم و اعاظم مفتیان حرمین طیبین‬‫کےحکم شرعی فتاو ی ٰ حسام الحرمین عل ی ٰ من...
‫اور آگاہ کیا گیا گستاخانہ کفریہ عبارات سےتوبہ‬             ‫اور رجوع کی تلقین فرمائی گئی ،‬‫آمنےسامنےبیٹھ کر گفتگو کی دعو...
‫طلب کیا اور توہین پر تکفیر ہوئی اگر کوئی‬‫توہین نہ کرتا تکفیر نہ ہوتی اور اگر اہل توہین و‬    ‫تنقیص توبہ و رجوع کرلیتےتو...
‫جانتےتھےدھوکہ دیکر فتو ی ٰ لیا ۔ یہ اہل توہین‬          ‫ہندی و انگریزی مولوی کٹی پٹی عربی‬‫جانتےہیں ، تو کیا علماءحرمین ...
‫تحذیرالناس ، براہین قاطعہ ، حفظ الیمان ،‬‫فتو ی ٰ گنگوہی وقوع کذب کی پہلےحسام الحرمین‬     ‫سےمطابقت کرلیں اور پھر المہند...
‫کیوں نہ کرلی اسی وقت علماءحرمین کو حسام‬‫الحرمین پر تقریظات لکھنےسےمنع کیوں نہ کردیا‬ ‫کہ جناب یہ دھوکہ دیا جارہا ہےمگر و...
‫کا وعدہ کرکےجدہ بھاگ گئےاور تین سال بعد‬  ‫جوڑ توڑ اور ہیرا پھیری کرکےاپنےتمام اکابر ہند‬ ‫کےتعاون و تصدیقات سےالمہند نام...
‫تصدیقات حاصل کی تھیں ۔ جبکہ خلیل انبیٹھوی‬      ‫صاحب سر دھڑ کی بازی لگاکر بمشکل 6‬‫علماءکی تصدیقات المہند پر حاصل کرسکا ...
‫المرجب 5431 ھ کتاب اکابر کےخطوط صفحہ‬‫11, 21 پر مولوی محمد زکریا سابق امیر تبلیغی‬    ‫جماعت کےنواسےمولوی محمد شاہد مظاہر...
‫حقیقت و صداقت کا منہ چڑایا مولوی خلیل‬    ‫انبیٹھوی اور مولوی حسین احمد کانگریسی‬     ‫ٹانڈوی ا ُن دنوں وہیں حرمین شریفین...
‫دیا مگر حقیقت یہ ہے‬    ‫تیرےاعداءمیں رضا کوئی بھی منصور نہیں‬          ‫بےحیا کرتےہیں کیوں شور بپا تیرےبعد‬             ...
‫الحرمین کا رد اور جواب کیسےقرار دیا جاسکتا‬     ‫ہے۔ بفضلہ تعال ی ٰ حسام الحرمین کل بھی‬‫لجواب تھا اور آج بھی لجواب ہےاور...
‫:: ح سا م الحرمین والمہند کا معنی و مفہوم : :‬  ‫حسام الحرمین کا معنی ہے “ مکہ مدینہ کی تیز‬    ‫کاٹنےوالی تلوار ” “ مکہ ...
‫آگ کا شعلہ مکہ مدینہ کی تیز تلوار کا کیا بگاڑ‬   ‫سکےگا ؟ آسمان سےستارےکم و بیش ہر شب‬ ‫ٹوٹتےہیں بتایا جائےان سےکتنی تلوا...
‫اس بات کی تفصیل بیان کرنا ممکن نہیں ، ہاں‬        ‫اتنا ضرور کہونگا ملتان کےمکتبہ صدیقہ‬  ‫سےچھپنےوال اور کراچی کےمکتبہ ت...
‫عنہ نےٹھیک ہی تو فرمایا تھا‬ ‫سونا جنگل رات اندھیری چھائی بدلی کالی ہے‬     ‫سونےوالوجاگتےرہیو چوروں کی رکھوالی ہے‬ ‫: : ...
‫ہیں اور عوام کو گمراہ کرنےکےلئےجو پیوند‬‫کاریاں کیں ٹاکیاں لگائیں گالی گفتار سمیت 405‬   ‫صفحات ہیں ۔ تحذیرالناس ایک مختص...
‫میں نہ رہیں اور خود مخالفین کو ان پر ترمیمات‬    ‫و تحریفات کےخول چڑھانےپڑےمگر گستاخانہ‬                  ‫عبارات سےتوبہ ...
‫تعال ی ٰ علیہم اجمعین اور اجماع امت کےخلف‬    ‫جوجدید معنی و مفہوم خاتم النبیین کےبیان‬ ‫کئےگئےفتاو ی ٰ حسام الحرمین کی ا...
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Khatme nabuwat aur thanvi  -qadyani
Upcoming SlideShare
Loading in …5
×

Khatme nabuwat aur thanvi -qadyani

1,313 views
1,117 views

Published on

Published in: Technology, Business
0 Comments
0 Likes
Statistics
Notes
  • Be the first to comment

  • Be the first to like this

No Downloads
Views
Total views
1,313
On SlideShare
0
From Embeds
0
Number of Embeds
1
Actions
Shares
0
Downloads
6
Comments
0
Likes
0
Embeds 0
No embeds

No notes for slide

Khatme nabuwat aur thanvi -qadyani

  1. 1. ‫لطیفہ نمبر 11‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 11:00 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 11‬‫مولنا تھانوی نے عقد ثانی ل ذ ّت نفس کے لئےکیا،‬ ‫مگر مریدین و معتقدین پر رنگ جمانے ، زہد و‬‫تق و ٰی کا رعب گانٹھنے اور جگ ہنسائی سے خود‬ ‫کو بچانے کیلئے کافی بل کھائے اور پینترے بدلے ،‬ ‫فاضل دیوبند مولنا اکبر آبادی کا‬ ‫تبصرہ !!!!!!!!!!!! !‬‫مولنا تھانوی جیسا کہ خود فرماتے ہیں ، دوسرا‬‫نکاح محبت دلی کے اقتضاء سے کرتے ہیں ، لیکن‬ ‫شہرت و جاہت خانگی چپقلش کی وجہ اور‬ ‫برادری میں چہ میگو ئیوں کی وجہ سے اس‬ ‫واقعہ کے سبب مولنا تھانوی کو جو ضعطئہ‬ ‫دماغی ) ‪ ( com plex‬پیش آ گیا ہے اس کی وجہ‬ ‫سے اپنے فعل کی تاویل و توجیہ میں ّعجیب‬ ‫عجیب باتیں کہتے ہیں حالنکہ سیدھی بات یہ‬
  2. 2. ‫تھی کہ میں نے عقد ثانی کیا ہے اور یہ شرع میں‬ ‫نا جائز نہیں ہے ، بس بات ختم ہو جاتی ۔‬ ‫لیکن مولنا کبھی تو فرماتے ہیں کہ بے ساختہ‬ ‫ذہن میں آیا کہ بہت سے درجات موقوف ہیں ،‬ ‫سقوط جاہ و بدنامی پر جس سے تو اب تک‬‫محروم ہے ، پس اس واقعہ میں حکمت یہ ہے کہ‬ ‫تو بدنام ہو گا اور حق تعا ل ٰی درجات عطا‬ ‫فرمائیں گے ۔ کبھی مولنا تھانوی فرماتے ہیں‬‫ایک مصلحت یہ بھی ظاہر ہوئی کہ اس سے پہلے‬ ‫موت کی محبوبیت کی دولت نصیب نہ تھی ،‬ ‫الحمد للہ کہ اس واقعہ ) شاد ی ( سے یہ دولت‬ ‫بھی نصیب ہو گئی ۔ پھر ارشاد ہوتا ہے ، مجھ‬ ‫کو ثواب آخرت سے طبعا کم دلچسپی تھی ، اب‬‫معلوم ہوا کہ یہ ایک قسم کی کمی اور استغناء‬ ‫تھی ، الحمد للہ کہ اس کمی کا تدارک ہو گیا ۔‬‫اس کے بعد مولنا تھانوی کا ارشاد ہے کہ حلم و‬ ‫تحمل کا ذوق نہ تھا ۔ خدائے تعا ل ٰی کا احسان‬‫ہے کہ یہ کام بھی ) ب ع د شاد ی ( پورا ہو گیا ۔ اس‬
  3. 3. ‫کے علوہ اور بھی بہت سی مصلحتیں لکھیں‬ ‫ہیں جن سے معلوم ہوتا ہے کہ مولنا تھانوی نے‬‫عقد ثانی کیا کیا ، سلوک و معرفت اور طریقت و‬‫حقیقت کی صبر آزما منزلیں بیک جنبش قدم طے‬ ‫کر لی ہیں ، جو ملکات و فضائل اور کمالت‬‫روحانی و باطنی سالہا سال کے بعد مجاہدہ اور‬ ‫ریاضت شاقہ کے بعد بھی حاصل نہیں ہوتے وہ‬‫عقد ثانی کرتے ہی فورا مولنا کو حاصل ہو گئے ۔‬ ‫) برہان دہلی 2591 ء فروری ص 501 (‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫لطیفہ نمبر 01‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:59 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 01:-‬ ‫حضرات یوسف و موسٰی وعیسٰی علیہم السلم میں جو‬ ‫ٰ‬‫کمالت انفرادا تھے ، وہ مجموعی طور پر شاہ وصی اللہ‬ ‫صاحب میں تھے ۔ مدیر ’’ الحسان ’’ کی پیر پرستی‬
  4. 4. ‫یہ مذکورہ بال امور ’’ شرک فی الرسالۃ’’ ہیں ۔ فاضل‬ ‫دیوبند مولنا اکبر آبادی کا جواب!‬ ‫منجملہ انھیں حضرات کے مرشدی و مولئی محی السنۃ‬‫والخلق ماحی البدعۃ والنفاق حضرت مولنا الشاہ محمد‬‫وصی اللہ صاحب دامت برکاتہم واضہم بھی ہیں۔ آپ کی‬ ‫جامعیت و کمال کے بارے میں اپنا خیال یہ ہے کہ‬ ‫۔۔۔۔۔آفاقہا گرویدہ ام مہر تباں ورزیدہ ام‬ ‫۔۔۔۔۔بسیار خوہان دیدہ ام لیکن تو چیزےدیگری‬ ‫۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔)یا(۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔‬ ‫حسن یوسف دم عیسٰے ید بیضا داری‬ ‫آنچہ خوباں ہمہ دارند تو تنہا داری‬ ‫)رسالہ الحسان جلد 2 ستمبر 55ء ص 4 (‬ ‫لیکن فاضل دیو بند مولنا سعید احمد اکبر آبادی فرماتے‬ ‫ہیں :-‬ ‫اس مقام پر ایک نہایت اہم اور ضروری نکتہ جسے اپنے‬‫مرشد کے ساتھ غالی عقیدت و ارادت رکھنے والے مرید اکثر‬‫بھول جاتے ہیں ، ہمیشہ یاد رکھنا چاہیئے کہ جس طرح اللہ‬‫تعالٰی کی ذات و صفات میں کسی کو شریک ماننا ، شرک‬
  5. 5. ‫فی اللہ اور کفر ہے اسی طرح آنخضرت صلی اللہ علیہ‬ ‫وآلہ وسلم کے اوصاف و کمالت نبوت میں کسی کو‬‫شریک جاننا شرک فی الرسالۃ اور عظیم ترین معصیت ہے‬ ‫۔) برہان ،دہلی فروری 2591 ء ص 801 (‬ ‫فاضل دیوبند موصوف کے اس اقتباس سے معلوم ہوا کہ‬ ‫یہ عقیدہ غیر نبی کیلئے کہ‬ ‫حسن یوسف دم عیسٰی ید بیضا داری‬ ‫آنچہ خوباں ہمہ دارند تو تنہا داری‬ ‫شرک فی الرسالۃ اور عظیم ترین معصیت ہے ۔ کیونکہ‬‫شعر مذکورہ کے مصداق صرف تاجدار دو عالم ہیں نہ کہ‬ ‫مولنا شاہ وصی اللہ‬ ‫کاش مدیر الحسان خدا پرستی کو چھوڑ کر پیر پرستی‬ ‫کے نشہ میں وہ نہ لکھتے جو لکھ گئے ۔ انہیں تو یہ کہنا‬ ‫چاہئے تھا ،،‬ ‫چھٹ جائے اگر دولت کونین تو کیا غم !‬ ‫چھوٹے نہ مگر ہاتھ سے دامان محمد صلی اللہ علیہ وآلہ‬ ‫وسلم ۔آمین‬ ‫‪Leave a Comment‬‬
  6. 6. ‫لطیفہ نمبر 9‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:57 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 9 :-‬‫مولنا تھانوی کے پردادا مرنے کے بعد زندوں کے مثل آتے اور‬ ‫ساتھ میں مٹھائیاں لتے ۔ جب بدنامی کے ڈر سے گھر‬ ‫والوں نے راز فاش کر دیا تو ان کا مٹھائیوں کے ساتھ آنا‬ ‫بند ہو گیا ۔ اشرف السوانح کا ’ تقویۃ الیمان شکن’‬ ‫انکشاف‬ ‫شہادت کے بعد ایک عجیب واقعہ ہوا ، شب کے وقت اپنے‬ ‫گھر مثل زندوں کے تشریف لئے اور اپنے گھر والوں کو‬‫مٹھائی ل کر دی ، اور فرمایا کہ اگر تم کسی سے ظاہر نہ‬ ‫کرو گی تو اسی طرح روزانہ آیا کریں گے ، لیکن ان کے‬ ‫گھر والوں کو یہ اندیشہ ہوا کہ گھر والے جب بچوں کو‬‫مٹھائی کھاتے دیکھیں گے تو معلوم نہیں کیا شبہہ کریں ۔‬ ‫اسی لئے ظاہر کر دیا اور پھر آپ تشریف نہیں لئے ، یہ‬ ‫واقعہ خاندان میں مشہور ہے ۔ ) اشرف السوانح حصہ‬ ‫اول ص 21 (‬
  7. 7. ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫لطیفہ نمبر 8‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:56 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 8 :-‬‫فضائل مصطفٰی آج مصلحۃً بیان کر دینا چاہئے تا کہ وہابیت‬ ‫کا شبہہ ختم ہو سکے ۔‬ ‫———————علمائے دیوبند کا نقطہ نظر‬ ‫فضائل کے لئے روایات درکار ہیں اور وہ مجھے یاد نہیں۔‬ ‫مولنا تھانوی کا ارشاد!!‬‫دارالعلوم دیوبند کے بڑے جلسے دستار بندی میں بعض اکابر‬‫نے ارشاد فرمایا کہ اپنی جماعت کی مصلحت کے لئے حضور‬ ‫صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے فضائل بیان کئے جائیں تا کہ‬ ‫اپنے مجمع پر جو وہابیت کا شبہ ہے وہ دور ہو اور موقع‬ ‫بھی اچھا ہے کیونکہ اس وقت مختلف طبقات کے لوگ‬‫موجود ہیں۔ حضرت وال )’تھانوی صاحب’( نے باادب عرض‬ ‫کیا ،‬
  8. 8. ‫اس کے لئے روایات کی ضرورت ہے اور وہ روایات مجھ کو‬ ‫مستحفر نہیں۔ ) اشرف السوانح حصہ اول ص 67 (‬‫یہ حضرت وال وہی ہیں جن کے بارے میں بعض لوگوں نے‬ ‫یہ عقیدہ بنا رکھا ہے وہ حکیم المت، مجدد دین و ملت،‬‫آیۃ من آیات اللہ، حجۃ اللہ فی الرض اور نہ جانے کیا کیا‬ ‫ہیں۔ مگر قربان جائیے ان کے مبلغ علم اور جذبہ محبت‬ ‫رسول پر کہ حجۃ اللہ فی الرض اور آیۃ من آیات اللہ‬ ‫ہوتے ہوئے بھی نہ تو فضائل رسول کی روایات ان کو‬ ‫مستحضر ہیں اور نہ ہی بیان فضائل سے کچھ‬ ‫دلچسپی ۔‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫لطیفہ نمبر 7‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:55 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 7:-‬‫ان کی اوصاف شماری میں حد درجہ غلُو اور مبالغہ کیا‬ ‫گیا۔‬
  9. 9. ‫ان کو صحابہ و تابعین کیا معنٰی انبیاء سے بھی جا ملیا‬ ‫ہے۔‬ ‫دلداگان مولنا تھانوی کے بارے میں فاضل دیوبند مولنا‬ ‫اکبر آبادی کی رائے !‬ ‫ہم پہلے بتا چکے ہیں کہ ان کی اوصاف شماری میں اس‬‫درجہ غلو اور مبالغہ کیا گیا ہے کہ ان کو صحابہ و تابعین‬ ‫کیا معنٰی انبیاء سے بھی جا ملیا ہے ۔) برہان دہلی مئی‬ ‫25ء ص 792 (‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫لطیفہ نمبر 6‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:53 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 6 :-‬‫جب آپ نے اکابر دیوبند کے دین و ایمان کو سمجھ لیا کہ ’’‬ ‫ایں خانہ ہمہ آفتاب است ’’ تو آئیے اب ان حضرات کے‬‫حالت کا بھی ایک سرسری جائزہ ان کی ہی روایات کی‬ ‫روشنی میں لیتے چلیں۔‬
  10. 10. ‫وہ اپنے معاملت میں تاویل و توجیہہ و اغماض‬ ‫ومسامحت سے کام لیتے تھے !‬ ‫انھوں نے اپنے ایک مرید کے کفری طرز عمل کے بارے میں‬ ‫نہیں کہا کہ کلمئہ کفر ہے۔ اور شیطانی فریب اس کفری‬ ‫طرز عمل کو غایت محبت پر محمول کر کے ٹال دیا۔‬‫مولنا تھانوی کے بارے میں فاضل دیوبند مولنا سعید احمد‬ ‫اکبر آبادی کی تحقیق!‬ ‫’’اپنے معاملت میں تاویل و توجیہہ اور اغماض و‬ ‫مسامحت کرنے کی مولنا میں جو خو تھی اس کا اندازہ‬ ‫ایک واقعہ سے بھی کیا جاسکتا ہے کہ ایک مرتبہ کسی‬ ‫مرید نے مولنا کو لکھا کہ میں نے رات خواب میں دیکھا‬ ‫کہ میں ہر چند کلمئہ تشہید صحیح صحیح ادا کرنے کی‬‫کوشش کرتا ہوں لیکن ہر بار ہوتا یہ ہے کہ ل الٰہ ال اللہ کے‬ ‫بعد اشرف علی رسول اللہ منھ سے نکل جاتا ہے ظاہر ہے‬‫کہ اس کا صاف اور سیدھا جواب یہ تھا کہ کلمئہ کفر ہے‬ ‫شیطان کا فریب ہے اور نفس کا دھوکہ ہے۔ تم فورا توبہ‬‫کرو اور استغفار پڑھو۔ لیکن مولنا تھانوی صرف یہ فرما‬ ‫کر بات آئی گئی کر دیتے ہیں کہ تم کو مجھ سے غایت‬
  11. 11. ‫محبت ہے اور یہ سب اسی کا نتیجہ و ثمرہ ہے ’’ ) برہان‬ ‫دہلی فروری 2591 ء صفحہ 701 (‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫لطیفہ نمبر 5‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:51 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 5 :‬ ‫سوال : کیا ارشاد ہے علمائے دین کا اس شخص کے بارے‬ ‫میں جو کہے کہ اللہ تعالٰی کو زمان و مکان سے پاک اور‬ ‫اس کا دیدار بےجہت حق جاننا بدعت ہے اور یہ قول کیسا‬ ‫ہے ۔ بیّنو وتوجروا۔‬ ‫الجواب :‬ ‫یہ شخص عقائد اہلسنت سے جاہل اور بے بہرہ اور دہ‬‫مقولہ کفر ہے ۔ واللہ اعلم بندہ رشید احمد گنگوہی ) نشان‬ ‫مہر(‬ ‫الجواب صحیح ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اشرف علی عفی عنہ‬ ‫حق تعالٰی کو زمان و مکان سے منزّہ ماننا عقیدہ اہل‬
  12. 12. ‫ایمان ہے اس کا انکار الحاد و زندقہ ہے اور دیدار حق‬ ‫تعالٰی آخرت میں بے کیف و بے جہت ہو گا ۔ مخالف اس‬ ‫عقیدے کا بد دین و ملحد ہے ۔کتبہ عزیز الرحمٰٰن عفی عنہ‬ ‫)نشان مہر( مفتی مدرسۃ دیوبند‬ ‫الجواب صحیح ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بندہ محمود حسن عفی عنہ‬ ‫مدرس اول دیوبند ’’ وہ ہر گز اہل سنت سے نہیں ہے ’’‬ ‫حرّرہ المسکین عبد الحق‬ ‫الجواب صحیح ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ محمود حسن مدرس دوم‬‫مدرسۃ شاہی ، مراد آباد ’’ ایسے عقیدے کو بدعت کہنے وال‬ ‫دین سے نا وا قف ہے’’ ابو الوفا ثناء اللہ ) نشان مہر(‬ ‫اب سنئے !‬‫عبارت کس کتاب کی ہے اور کس عالم کے قلم سے یہ باتیں‬ ‫نکلی ہیں ۔ ’’ایضاح الحق ’’ مولنا اسمٰعیل دہلوی کی‬‫تصنیف ہی بصورت استفتاء بھیجی گئی عبارت اسی کتاب‬ ‫کے صفحہ 53، 63 سے ماخوذ ہے ، ملحظہ فرمائیں۔‬ ‫تنزیہ او تعالٰی از زمان و مکان‬ ‫و جہت و اثبات رویت بل جہت و‬ ‫محاذات الخ ہمہ از قبیل بدعات‬
  13. 13. ‫حقیقہ است اگر صاحب آں اعتقادات‬ ‫مذکورہ را از جنس عقائد دینیہ می شمارد‬‫جب یہ راز فاش ہو گیا کہ اکابر دیوبند نے جس شخص کو‬ ‫جاہل بے بہرہ کافر، ملحد، زندیق، بے دین، اور غیر سنّی‬‫قرار دیا ہے وہ انہیں حضرات کے امام و پیشوا ، شہید بے نوا‬ ‫مولنا اسمٰعیل دہلوی ہیں تو مولنا رشید احمد گنگوہی کو‬ ‫اظہار افسوس ان الفاظ میں کرنا پڑتا ہے ۔‬‫ایضاح الحق ’’بندہ کو یاد نہیں ہے کیا مضمون اور کس کی‬ ‫تالیف ’’) فتاوٰے رشیدیہ کامل ص 632 ، کتب خانہ رحیمیہ‬ ‫دیوبند (‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫لطیفہ نمبر 4‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:50 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 4 :-‬ ‫حفظ الیمان کی ایک متنازعہ عبارت کا واحد حل !‬ ‫عبارت درج ذیل ہے،‬
  14. 14. ‫’’پھر یہ کہ آپ کی ذات مقدّسہ پر علم غیب کا حکم کیا‬‫جانا اگر بہ قول زید صحیح ہو تو دریافت طلب یہ امر ہے کہ‬ ‫اس غیب سے مراد بعض غیب ہے یا کل ۔ اگر بعض علوم‬ ‫غیبیہ ہیں تو اس میں حضور ہی کی کیا تخصیص ہے ایسا‬ ‫علم تو زید و عمر و بلکہ ہر صبی و مجنون بلکہ بہائم کے‬ ‫لئے حاصل ہے ’’‬ ‫) حفظ الیمان مصنفہ مولنا تھانوی ص 7 (‬ ‫اس عبارت سے ایک معمولی اردو جاننے وال باآسانی‬ ‫سمجھ لے گا کہ مولنا تھانوی کے نزدیک نہ صرف فخر‬ ‫عالم غیب داں بلکہ زید و عمر و بلکہ ہر صبی و مجنون‬‫بلکہ بہائم بھی غیب داں ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مگر علمائے دیوبند‬ ‫کے مطاع عالم مخدوم الکل مولنا رشید احمد گنگوہی‬ ‫فرماتے ہیں !‬‫یہ عقیدہ رکھنا کہ آپ کو علم غیب تھا صریح شرک ہے ۔ )‬ ‫فتاوٰی رشیدیہ کامل کتب خانہ رحیمیہ دیو بند ص 69(‬‫مولنا گنگوہی کے اس فتوٰے کی روشنی میں مولنا تھانوی‬ ‫کے مشرک ہونے میں کوئی کلم نہیں ۔ بہر حال مسلمانوں‬ ‫کا ایک گروہ اس عبارت کی تائید میں ایڑی چوٹی کا زور‬
  15. 15. ‫لگا کر صحیح اور درست ثابت کرنے میں لگا ہوا ہے اور‬‫دوسرا گروہ اسی شدومد کے ساتھ تردید میں مصروف ہے۔‬ ‫چناچہ بات بڑھتی گئی اور نتیجہ اچھا ، برا نکلتا رہا۔‬‫اس سلسلہ میں میری تحقیق یہ ہے کہ مولنا مدنی، مولنا‬‫مرتضٰی حسن، اور مولنا منظور احمد نعمانی کی تاویلت‬ ‫و توضیحات سے جو نتیجہ نکلتا ہے وہی صحیح اور درست‬ ‫ہے چناچہ مولنا مدنی فرماتے ہیں !‬ ‫حضرت مولنا )تھانوی( عبارت میں لفظ ’’ایسا’’ فرمارہے‬‫ہیں لفظ ’’اتنا’’ تو نہیں فرماریے ہیں۔ اگرلفظ ’’ اتنا’’ ہوتا تو‬‫اس وقت البتہ احتمال ہوتا کہ معاذاللہ حضور علیہ السلم‬‫کے علم کو اور چیزوں کے برابر کر دیا۔ ) الشہاب الثاقب ص‬ ‫11 مطبع قاسمی دیوبند (‬ ‫آگے چل کر فرماتے ہیں ۔‬ ‫’’اس سے بھی قطع نظر کر لیں تو لفظ ایسا ’’تو کلمہ‬ ‫تشبیہہ کا ہے ’’‬ ‫مولنا مدنی کے اس ارشاد سے معلوم ہوا کہ ’’ عبارت‬ ‫مذکورہ ’’ میں لفظ ’’ ایسا ’’ تشبیہہ کے لئے ہے، اگر ’’ اتنا ’’‬ ‫یا ’’اس قدر’’ کے معنٰی میں ہوتا تو یقینا کفر تھا ۔‬
  16. 16. ‫اب دیکھئیے مولنا مرتضٰی حسن صاحب در بھنگی کیا‬ ‫فرماتے ہیں !‬ ‫واضح ہو کہ ’’ایسا’’ کا لفظ فقط ’’مانند اور مثل’’ ہی کے‬‫معنٰی میں مستعمل نہیں ہوتا بلکہ اس کے معنٰی ’’اسقدر’’‬‫اور ’’اتنے’’ کے بھی آتے ہیں جو جگہ )یعنی عبارت مذکورہ (‬ ‫متعین ہیں ۔ ) توضیح البیان ص 8 مطبع قاسمی دیوبند(‬ ‫مزید فرماتے ہیں !‬ ‫عبارت متنازعہ فیہا میں لفظ ایسا بمعنٰی ’’اس قدر اور‬ ‫اتنا’’ ہے پھر تشبیہہ کیسی؟ ) توضیح البیان ص 71 ‌(‬ ‫مولنا منظوربھی ایسا ہی فرماتے ہیں !‬ ‫حفظ الیمان کی اس عبارت میں بھی ’’ایسا’’ تشبیہہ کے‬ ‫لئے نہیں ہے بلکہ وہ یہاں بدون تشبیہہ کے اتنا کے معنی‬ ‫میں ہے ) فتح بریلی کا دلکش نظارہ ص 23 (‬ ‫تقریبا یہی مضمون کتاب مذکورہ کے صفحہ 43 ، 04، اور‬ ‫84، پر بھی ہے ۔ اس اجمالی گفتگو سے یہ بات واضح ہو‬‫گئی کہ مولنا مرتضٰی حسن اور مولنا منظور نعمانی اس‬‫بات پر متفق ہیں کہ عبارت متنازعہ فیہا میں لفظ ’’ ایسا’’‬ ‫بمعنی ’’اسقدر اور اتنا’’ ہے۔ اگر تشبیہہ کے لئے ہوتا تو‬
  17. 17. ‫موجب کفر ہوتا ۔‬‫اگر بالفرض اس عبارت کا وہ مطلب ہوا جو مولوی سردار‬ ‫احمد صاحب بیان کر رہے ہیں جب تو ہمارے نزدیک بھی‬ ‫موجب کفر ہے۔ ) ایضا (‬ ‫حاصل کلم !‬‫مولنا مرتضٰے حسن اور مولنا نعمانی کے نزدیک لفظ ایسا‬ ‫’’ بمعنٰٰی اتنا اور اس قدر ہے اگر تشبیہہ کے لئے قرار دیا‬ ‫جائے تو کفر ہے اور مولنا مدنی کے نزدیک لفظ ایسا‬ ‫تشبیہہ کیلئے ہے ۔ اگر بمعنٰی ’’اتنا اور اس قدر’’ قرار دیا‬ ‫جائے تو کفر ہے ۔‬ ‫حل !‬‫عبارت متنازعہ فیہا میں لفظ ایسا کے دو ہی معنٰی ہیں ۔ )‬ ‫1( یا تو تشبیہہ کے لئے ہے )2( یا بمعنی اس قدر یا اتنا ۔‬ ‫پہلی شق مولنا مرتضی حسن اور مولنا نعمانی کے‬ ‫نزدیک کفر ۔‬ ‫اور دوسری شق مولنا مدنی کے نزدیک کفر ۔‬‫اس سے معلوم ہوا کہ دونوں شقیں کفر ہیں ۔ اس عبارت‬ ‫متنازعہ کی کوئی تاویل نہیں ۔ نیز یہ نتیجہ بھی قدرتی‬
  18. 18. ‫طور پر برآمد ہو گیا کہ‬ ‫مولنا مرتضٰی حسن اور مولنا نعمانی دونوں کے دونوں‬ ‫مولنا مدنی کی تاویل کی روشنی میں کافر ۔‬ ‫اور مولنا مدنی بھی مولنا مرتضٰے حسن اور اور مولنا‬ ‫نعمانی کی تاویل کی روشنی میں کافر ۔‬ ‫فالحمد للہ رب العالمین‬ ‫الجھا ہے پاؤں یار کا زلف دراز میں‬ ‫خود آپ اپنے دام میں صیّاد آگیا۔‬‫اس صورت حال کو دیکھ کر مجھے ایک اور شعر یاد آ گیا‬ ‫،‬ ‫ایسی ضد کا کیا ٹھکانہ دین حق پہچان کر‬ ‫ہم ہوئے مسلم تو وہ مسلم ہی کافر ہو گیا‬ ‫———-،،،،،۔۔۔۔۔۔،،،،————–‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫ٌلطیفہ نمبر 3‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:46 am‬‬
  19. 19. ‫ٌلطیفہ نمبر 3 :-‬‫سوال:- کیا فرماتے ہیں علماء دین اس مسئلہ میں کہ ایک‬ ‫میلد خواں نے مندرجہ ذیل شعر محفل مولود میں نبی‬ ‫اکرم صلے اللہ علیہ وسلم کی نعت میں پڑھا ۔ شعر:‬ ‫جو چھو بھی دیوے سگ کوچہ تیرا اسکی نعش‬ ‫تو پھر بھی خلد میں ابلیس کا بنائیں مزار‬ ‫—————جواب———————-‬‫1: یہ شعر پڑھنا حرام اور کفر ہے ، اگر یہ سمجھ کر پڑھے‬ ‫کہ اس کا اعتقاد اور پڑھنا کفر ہے تب تو اس کا ایمان‬ ‫باقی نہ رہا اور اگر یہ علم نہ ہو تو اس کا پڑھنا اور‬‫اعتقاد کفر ہے ، یہ شخص فاسق اور سخت گنہگار ہے اس‬ ‫کو تابہ مقدور اس حرکت سے روکنا شرعا لزم ہے۔ احمد‬ ‫حسن 51 شوال 9631 ھ سنبھل‬ ‫2:- اس شعر کا مفہوم کفر ہے، لکھنے وال اور عقیدے سے‬‫پڑھنے وال خارج از ایمان ہے ایسے صریح الفاظ میں تا ویل‬ ‫کی گنجائش نہیں ۔ ظہور الدین سنبھل‬ ‫3:- کسی بے ہودہ اور جاہل آدمی کا شعر ہے ،بیوقوف اور‬ ‫بے ہودہ لوگ ہی ایسے مضمون سے محفوظ ہوتے ہیں، اگر‬
  20. 20. ‫یہ اس کا عقیدہ ہے تو کفر ہے۔ دیندار آدمی اس کے سننے‬ ‫سے بھی احتیاط کرنا چاہئیے۔ سعید احمد سنبھل‬ ‫4:- اس شعر کا نعت میں پڑھنا اور سننا دونوں کفر ہے۔‬ ‫وارث علی عفی عنہ سنبھل‬ ‫5:-تینوں حضرات دام ظلہم العالی کے جوابات کی میں‬ ‫بالکل موا موافقت کرتا ہوں )محمد ابراہیم عفی عنہ‬ ‫مدرسۃ الشرع سنبھل(‬ ‫6:- شعر مذکور اگر چہ نعت میں ہے لیکن حد شرع سے‬ ‫باہر ہے ایسا شعر نہ کہنے والے کو کہنا اور نہ پڑھنے والوں‬‫کو پڑھنا جائز ہے یہ غلو اور قبیح ہے محمد کفایت اللہ کان‬ ‫اللہ لہ۔ دہلی‬ ‫نمبر 2:- الف فتوٰے‬ ‫مذکورہ شعر اگر چہ آنخضرت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم‬ ‫کی تعریف میں شاعر نے کہا ہے لیکن اتنا ضرور ہے کہ کہ‬ ‫شاعر شرعی اصول سے واقف نہیں ہے شعر میں حد‬ ‫درجہ کا لغو ہے جو اسلمی اصول کے کسی طرح مناسب‬‫نہیں ہے شاعر کافر اس وجہ سے نہیں ہو سکتا کہ شعر کا‬ ‫پہل مصرع شرط ہے )جو( معنٰی میں اگر کے ہے اور محال‬
  21. 21. ‫چیز کو فرض کر رکھا ہے۔ شرط کا وجود محال ہے اسلئے‬ ‫دوسرا مصرعہ جو بطور جزا کے ہے۔ اس کا مترتب ہونا‬ ‫بھی محال ہے مگر شعر نعت رسول سے بہت گرا ہوا اور‬ ‫رکیک ہے۔ ایسے غلو سے شاعر کو بچنا فرض اور ضروری‬ ‫ہے۔ ایسے اشعار سے آپ کی تعظیم نہیں ہوتی بلکہ توہین‬ ‫کا پہلو نمایاں ہو جاتا ہے ، یہ صحیح ہے کہ قرآن کے حکم‬ ‫کے مطابق ابلیس جنت میں نہیں جائے گا۔ مگر اس شعر‬ ‫کے قائل کو کافر نہیں کہہ سکتے کہ اس میں محال کو‬‫فرض کر رکھا ہے جب تک صحیح توجیہہ اس کے کلم کی‬‫ہو سکتی ہے اس وقت تک اس کے قائل کو کافر کہنا جائز‬ ‫نہیں۔ ایسے اشعار مولود میں پڑھنا نہیں چاہئے – واللہ‬ ‫اعلم‬ ‫کتبہ ۔ سیّد مہدی حسن صدر مفتی دارالعلوم دیوبند 31 /‬ ‫2 07ھ جمعہ‬ ‫یہ بات دلچسپی سے خالی نہ ہو گی کہ جس شعر پر‬ ‫مذکورہ مفتیان دیوبند نے کفر و ضللت کے فتوٰے صادر‬ ‫فرمائے ہیں۔ وہ شعر بانی دارالعلوم دیوبند مولنا قاسم‬ ‫نانوتوی کا ہے گویا مذکورہ مفتیوں نے اپنے ’’ قاسم العلوم‬
  22. 22. ‫والخیرات’’ کو ہی کافر و فاسق قرار دیا ہے۔ ملحظہ ہو‬ ‫شعر مع حوالہ ۔۔،‬ ‫جو چھو بھی دیوے سگ کوچہ تیرا اسکی نعش‬ ‫تو پھر تو خلد میں ابلیس کا بنائیں مزار‬ ‫) ماخوذ از قصائد قاسمی مصنفہ مولنا قاسم نانوتوی‬ ‫ص 77 مطبوعہ ساڈھورہ ضلع انبالہ(‬ ‫مختصر یہ کہ مولنا قاسم نانوتوی مذکورہ مفتیوں کی‬ ‫نظر میں ،‬ ‫1:- کافر، بے ایمان، فاسق، اور سخت گنہگار ہیں۔)عالم‬ ‫دیوبند مفتی احمد حسن سنبھل(‬ ‫2:-مولنا کے شعر کا مفہوم کفر، اس میں تاویل کی‬ ‫گنجائش نہیں۔) عالم دیوبند مفتی ظہور الدین سنبھل(‬ ‫3:-مولنا بے ہودہ اور جاہل آدمی ہیں۔ ) عالم دیوبند مفتی‬ ‫سعید احمد سنبھل(‬ ‫4:- مولنا کے اس شعر کو نعت میں لکھنا اور پڑھنا‬ ‫دونوں کفر۔ ) عالم دیوبند مفتی وارث علی سنبھل(‬‫5:- مولنا کا کافر، بے ہودہ اور جاہل ہونا بالکل صحیح ہے۔ )‬ ‫عالم دیوبند مفتی محمد ابراہیم مدرسۃ الشرع(‬
  23. 23. ‫6:- مولنا کا یہ شعر حد شرع سے باہر ، غلو اور قبیح ہے۔ )‬ ‫عالم دیوبند مفتی محمد کفایت اللہ، دہلی(‬ ‫7:- مولنا شرعی اصول سے ناواقف، حد درجہ غالی اور‬‫توہین رسول کے مرتکب ہیں۔ ان کا یہ شعر بہت گرا ہوا اور‬ ‫رکیک ہے۔ ) صدر مفتی دارالعلوم دیوبند سیّد مہدی حسن‬ ‫صاحب(‬ ‫۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔————۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫مہتمم دیوبند کے خلف مفتی دیوبند کا فت و ٰی‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 10:45 am‬‬ ‫لطیفہ نمبر 2 :-‬ ‫مہتمم دیوبند کے خلف مفتی دیوبند کا فتوٰی‬ ‫ملحد، بے دین، عیسائیت و قادیانیت کی روح‬ ‫قاری طیب جب تک توبہ نہ کریں ان کا بایئکاٹ کیا جائے،‬ ‫ہمارے علماء کے مشاغل دینیّہ کی عبرت انگیز مثالیں !‬ ‫2 جنوری ہفت روزہ ’’ دور جدید’’ دہلی کی موٹی موٹی‬
  24. 24. ‫سرخیاں !‬ ‫اسی فتوے کے بارے میں جناب ابو محمد امام الدین رام‬ ‫نگری اپنے ماہنامہ انوار اسلم ص 7 تحریر فرماتے ہیں :-‬ ‫یہ کہنے کی ضرورت نہیں کہ سرخیاں کتنی ہولناک اور‬ ‫پریشان کن ہیں ’’دور جدید’’ کی اسی اشاعت میں‬ ‫دوسری جگہ استفتاء اور صدر مفتی دارالعلوم دیوبند‬ ‫مولنا سیّد مہدی حسن صاحب کا فتوٰی بھی نظر سے‬‫گزرا۔ واقعہ یہ ہے کہ حضرت مولنا قاری طیب صاحب کی‬ ‫کوئی نئی کتاب شائع ہوئی ہے جس کا نام ہے ’’اسلم اور‬‫مغربی تہذیب ’’ اس کتاب کے بعض اقتباسات سے کسی نے‬ ‫استفتاء مرتب کر کے مولنا مفتی مہدی حسن صاحب کے‬ ‫پاس بھیجدیا- اور کتاب کا حوالہ نہیں دیا ، مفتی صاحب‬ ‫نے شریعت کا حکم بیان کر دیا۔ بعد ازاں مستفتی نے‬ ‫استفتاء اور فتوٰی اس وضاحت کے ساتھ کہ اقتباسات‬ ‫حضرت مہتمم صاحب کی کتاب کے ہیں۔ اخبار ’’دعوت’’‬ ‫میں شائع کیا۔ ) انوار اسلم فروری 36ء ص 7 کالم 2(‬ ‫اب اخبار ’’ دعوت’’ ملحظہ فرمائیں ۔‬ ‫کیا فرماتے ہیں علمائے دین شرع متین مسئلہ ذیل میں کہ‬
  25. 25. ‫اگر کوئی عالم دین ’’ فارسلنا الیھا روحنا فتمثل لھا بشرا‬‫سویا کی تشریح اور اس سے درج ذیل نتائج اخذ کرتے ہوئے‬ ‫اس طرح لکھے:‬ ‫اقتباس 1 :- یہ دعوٰی تخیل یا وجدان محض کی حد سے‬‫گزر کر ایک شرعی دعوٰی کی حیثیت میں آجاتا ہے کہ مریم‬‫عذرا کے سامنے جس شبیہہ مبارک اور بشر سویّ نے نمایاں‬ ‫ہو کر پھونک ماردی وہ شبیہ محمدی تھی۔‬ ‫اس ثابت شدہ دعوے سے مبیّن طریق پر خود بخود کھل‬‫جاتا ہے کہ حضرت مریم رضی اللہ عنھا اس شبیہہ مبارک‬ ‫کے سامنے بمنزلہ زوجہ کے تھیں جب کہ اس کے تصرف‬ ‫سے حاملہ ہوئیں۔‬ ‫اقتباس 2:- پس حضرت مسیح کے ابنیت کے دعوے دار ایک‬ ‫ہم بھی ہیں مگر ابن اللہ مان کر نہیں بلکہ ابن احمد‬ ‫کہکر خواہ وہ ابنیت تمثالی ہی ہو۔‬‫اقتباس 3:- حضور تو بنی اسرائیل میں پیدا ہو کر کل انبیاء‬‫کے خاتم قرار پائے اور عیسٰی علیہ السلم بنی اسرائیل میں‬ ‫پیدا ہو کر اسرائیلی انبیاء کے خاتم کئے گئے جس سے ختم‬ ‫نبوت کے منصب میں ایک گونہ مشابہت پیدا ہو گئی۔ ) ابو‬
  26. 26. ‫لد سر لبیہ(‬ ‫اقتباس 4:-‬ ‫بہرحال اگر خاتمیت میں حضرت مسیح علیہ السلم کو‬‫حضور سے کامل مناسبت دی گئی تھی تو اخلق خاتمیت‬‫میں بھی مخصوص مشابہت و مناسبت دی گئی جس سے‬ ‫صاف واضح ہو جاتا ہے کہ حضرت عیسوٰی کو بارگاہ‬‫محمدی سے خَلقا و خُلقا ،رتبا ومقاما ایسی ہی مناسبت ہے‬‫جیسی کہ ایک چیز کے دو شریکوں میں یا باپ بیٹوں میں‬ ‫ہونی چاہئے۔‬‫براہ کرم مندرجہ بال اقتباسات کے متعلق قرآن حدیث کی‬ ‫روشنی میں دیکھتے ہوئے اس کی صحت اور عدم صحت‬ ‫کو ظاہر کر کے بتائیں کہ ایسا شرعی دعوٰی کرنے وال‬ ‫اہلسنت والجماعت کے نزدیک کیسا ہے؟ )المستفتی(‬ ‫الجواب :- جو اقتباسات سوال میں نقل کئے ہیں اس کا‬ ‫قائل قرآن عزیز کی آیات میں تحریف کر رہا ہے بلکہ در‬ ‫پردہ قرآنی آیات کی تکذیب اور ان کا انکار کر رہا ہے ،‬ ‫جملہ مفسرین نے تفاسیر میں تصریح کی کہ وہ جبرئیل‬ ‫علیہ السلم تھے جو مریم علیہا السلم کی طرف بھیجے‬
  27. 27. ‫گئے ۔ وہ شبیہہ محمدی نہ تھی ، آنحضرت صلے اللہ علیہ‬ ‫وآلہ وسلم اور صحابہ نے کبھی یہ نہ سمجھا کہ ان مثل‬ ‫عیسٰی عند اللہ کمثل اٰدم خلقہ من تراب ثم قال لہ کن‬ ‫فیکون ۔ کلمۃ القاھا الٰی مریم و روح منہ، فارسلنا الیھا‬ ‫روحنا فتمثل لھا بشرا سویا ) الٰی قولہ تعالٰی( فقال انما‬ ‫انا رسول ربک لھب لک غلما زکیا۔ قال ربک ھو علی‬ ‫ھین ولنجعلہ اٰیۃ للناس الٰی اٰخر ال ٰیات۔ ما کان محمد ابا‬ ‫احد من رجالکم ولٰکن رسول اللہ وخاتم النبیین کے قائل‬ ‫تھے اور اسی پر اجماع امت ہے کہ وہ فرشتہ تھا جو‬ ‫حضرت مریم کو خوشخبری سنانے آیا تھا۔ شخص مذکور‬ ‫ملحد و بے دین ہے اور اس ضمن میں عیسائیت کے عقیدے‬ ‫عیٰسی ابن اللہ کو صحیح ثابت کرنا چاھتا ہے جس کی‬‫تردید علی رؤس الشہاد قرآن نے کی ہے نیز ل تطرونی کما‬ ‫اطرت النصاری عیسٰی بن مریم ) الحدیث(‬ ‫ببانگ دہل شخص مذکورہ کی تردید کرتی ہے ۔‬ ‫الحاصل یہ اقتباسات قرآن و حدیث و جملہ مفسرین اور‬ ‫اجماع امت کے خلف ہیں مسلمانوں کو ہرگز اس طرف‬ ‫کان نہ لگانے چاہئے بلکہ ایسے عقیدے والے کا بائیکاٹ کرنا‬
  28. 28. ‫چاہئے۔ جب تک توبہ نہ کرے۔ واللہ تعالٰی اعلم‬ ‫سیّد مہدی حسن مفتی دارالعلوم دیوبند‬‫اب سنئے کہ عبارت کس کتاب کی ہے اور کس عالم کے قلم‬‫سے یہ باتیں نکلی ہیں؟ اسلم اور مغربی تہذیب کے عنوان‬ ‫سے قاری طیب صاحب مہتمم دارالعلوم دیوبند کی نئی‬ ‫کتاب چھپی ہے۔ اسی سے یہ اقتباسات لئے گئے ہیں اور ان‬‫ہی اقتباسات پر دارالعلوم کے مفتی صاحب نے فتوٰی یہ دیا‬ ‫کہ ایسے عقیدے والے کا بائیکاٹ کیا جانا چاہئے جب تک کہ‬ ‫وہ توبہ نہ کرے ) دعوت سہ روزہ ایڈیشن 22 دسمبر‬ ‫2691 ء صفحہ اول بعنوان ’’خبر و نظر’’(‬ ‫نبی کریم کے خلف صف آرا ہونے والوں کا سفینہ ء حیات‬ ‫جب طوفان خود فریبی میں ہچکولے کھانے لگا تو اس‬ ‫ہولناک صورت حال سے پریشان ہو کر حلقہ بگو شان‬ ‫دیوبند یہاں تک کہنے پر مجبور ہوئے۔‬ ‫استفتاء اور فتوے کی اشاعت اور اس بات کے معلوم‬ ‫ہوجانے کے بعد کہ فتوٰی مولنا محمد طیب کی کتاب کے‬ ‫متعلق ہے ہم نہیں جانتے کہ حضرت مولنا اور مفتی‬ ‫صاحب اور دارالعلوم پر اس کا رد عمل کیا ہوا؟ لیکن‬
  29. 29. ‫مولنا کے افکار و نظریات کو دیکھ کر ہمیں بڑی وحشت‬‫ہوئی۔ معلوم نہیں ان کو کیا ہو گیا ہے، اور اسلم و مغربی‬ ‫تہذیب میں مفاہمت کا یہ کون سا طریقہ ہے جو انہوں نے‬ ‫اختیار کیا ہے؟‬ ‫ہمیں حیرت ہے کہ مولنا محمد طیب صاحب کے دماغ میں‬ ‫ایسی باتیں کیسے پیدا ہوئیں، کیسے قلم سے نکلیں اور‬ ‫کیسے ان کی اشاعت ہو گئی؟‬ ‫ناشر بھی تو عالم ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مہتمم دارالعلوم کے‬ ‫خلف مفتی دارالعلوم کا فتوٰے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ کتنی قابل‬ ‫افسوس اور عبرتناک صورت حال ہے ۔ ) انوار اسلم‬ ‫فروری 36ء ص 8 (‬‫بہر حال مفتی دارالعلوم کے فتوے کی روشنی میں مہتمم‬‫دارالعلوم مولنا محمد طیب کی شرعی پوزیشن یہ متعیّن‬ ‫ہوتی ہے :-‬ ‫1: قرآن عزیز کی آیات میں تحریف کرنے کے سبب محرف‬ ‫قرآن ہیں۔‬ ‫2:بلکہ در پردہ قرآنی آیات کی تکذیب و تردید کے سبب‬ ‫منکر کتاب اللہ اور مکذب آیات قرآن ہوئے۔‬
  30. 30. ‫3:قاری صاحب موصوف ملحد و بے دین ہیں۔‬‫4:عیسائیت اور قادیانیت کی روح ان کے جسم میں سرایت‬ ‫کئے ہوئے ہے ۔‬‫5:وہ عیسائیت کے عقیدے ’’عیسٰی ابن اللہ’’ کو صحیح ثابت‬ ‫کرنا چاہتے ہیں۔‬ ‫6:مہتمم صاحب موصوف کے یہ اقتباسات قرآن وحدیث‬ ‫اور جملہ مفسرین اور اجماع امت کے خلف ہیں۔‬ ‫7:ان کو بائیکاٹ کرنا چاہئے جب تک توبہ نہ کریں۔‬ ‫مہتمم صاحب موصوف کی اس بے دینی اور الحاد پسندی‬ ‫پر پردہ ڈالنے کے لئے موصوف کےمحب صادق ابو محمد‬ ‫امام الدین رام نگری یہ مشورہ دے رہے ہیں۔‬ ‫’’دعوت’’ میں فتوٰے کی اشاعت کے تقریبا ایک ماہ کے بعد‬ ‫یہ شذرہ لکھا جا رہا ہے۔ ابھی تک جناب مولنا محمد‬‫طیب صاحب یا جناب مفتی صاحب کا بیان بھی شائع نہیں‬‫ہوا۔ ضرورت ہے کہ کتاب کی اشاعت روک دی جائے ۔ ) انوار‬ ‫اسلم فروری 36ء ص 8 (‬ ‫غور فرمائیے ! قاری صاحب پر الحاد و بے دینی کا فتوٰے‬
  31. 31. ‫لگے۔ آج ساتواں سال ہے ۔ یعنی 2691ء میں قاری صاحب‬ ‫ملحد و بے دین قرار دیئے گئے اور آج 8691ء۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہے ۔‬ ‫پھر بھی نہ قاری صاحب کو علمائے دیوبند نے بائیکاٹ کیا‬ ‫اور نہ ہی اساتذہ دارالعلوم ان سے قاطع تعلق ہوئے ۔‬‫درانحالے کہ ابھی تک قاری طیب صاحب نے اعلن توبہ نہ‬ ‫کرکے اسی ملحدانہ اور بے دینی کی روش کو اپنا رکھا ہے‬‫اس کا کھل اور واضح مطلب صرف یہ ہے کہ ایسا شخص‬‫جو صدر مفتی دارالعلوم دیو بند کے فتوٰے کی روشنی میں‬ ‫’’ ملحد اور بے دین’’ ہو۔ محرف قرآن و مکذب آیات ربانیہ‬ ‫ہو ۔ نیز عیسائیت وقادیانیت کی روح ہو ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ‬‫دارالعلوم دیوبند کے انتظام و اہتمام کی مسند عالی پر فائز‬ ‫ہو سکتا ہے اور اس منصب کا مستحق اسے قرار دیا‬‫جاسکتا ہے۔ایسی صورت میں خود دارالعلوم دیوبند کو، کیا‬ ‫اسلمی اور روحانی ادارہ قرار دیا جاسکتاہے۔جہاں کا‬ ‫مہتمم و منتظم خود وہیں کے صدر مفتی کی نظر میں ’’‬ ‫ملحد و بے دین ’’ ہو فیصلہ بذمئہ ناظرین ہے۔‬
  32. 32. ‫اردو اسلمی پاکستانی معلوماتی بلگ‬ ‫7002 ,51 ‪January‬‬ ‫مزا ر ِ ” بے چارہ و بے کار کا قصہ‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 8:02 pm‬‬ ‫)مبصر: سید وجاہت رسول قادری(‬‫1 ۔ قبر پر گنبد )عمارت( بنانا یا قبر کو پختہ کرکے‬ ‫مزار بنانا ناجائز ہے۔‬ ‫2 ۔ قبر پر فاتحہ/ میلد پڑھنا ناجائز ہے۔‬ ‫)مفتی کفایت اللہ دہلوی دیوبندی، کفایت‬ ‫المفتی، ج: 1 ، ص: 242 ، 632 ، دارالشاعت،‬ ‫کراچی 1002 ء(‬
  33. 33. ‫علمائے دیوبند بشمول جناب اشرفعلی تھانوی‬ ‫صاحب کا پختہ قبر کی تعمیر اور مزار پر‬‫حاضری اور ایصا ل ِ ثواب کے حوالے سے یہ متفقہ‬ ‫اور واضح فتو ی ٰ ہے لیکن اس واضح فتو ی ٰ کے‬ ‫باوجود دیوبندیوں کے شیخ مولوی اشرفعلی‬ ‫تھانوی صاحب کو خانقا ہ ِ امدادیہ اشرفیہ کی‬‫عمارت میں دفن کیا گیا اور اس پر “ پخت ہ مزار ”‬ ‫اور ق ب ّہ بھی تعمیر کیا گیا جہاں دیوبندی‬ ‫حضرات بشمول مہتمم و مجاور مولوی نجم‬ ‫الحسن تھانوی صاحب، حدیث “شد ّ رحال ” کی‬ ‫مخالفت کرتے ہوئے معمول کے مطابق حصو ل ِ‬ ‫برکت کے لئے روزانہ حاضری دیتے تھے۔ ایک‬ ‫اخباری اطلع ) ر و زنام ہ جنگ کراچی، مورخہ‬‫91 دسمبر 6002 ء/ روزنامہ امت کراچی، مورخہ‬‫02 دسمبر 6002 ء ( کے مطابق کسی “ شرپسن د ” یا‬ ‫“ دہش ت گرد ” نے درج بال دیوبندی فتوی پر عمل‬ ‫کرتے ہوئے ان کی “ پخت ہ مزار ” اور خانقاہ کے‬ ‫احاطے، ان کے بھائی مظہر علی “ خا ن بہادر ”‬
  34. 34. ‫) ج و برطانوی دو ر ِ حکومت میں انگریزوں کے‬ ‫سی۔آئی۔ڈی ایجنٹ تھ ے ( ، ان کی اہلیہ، ان کے‬ ‫“ خلیف ہ ” اور سابق مہتمم و مجاور خانقا ہ ِ‬‫امدادیہ اشرفیہ مولوی ظہور الحسن اور خاندان‬ ‫کے چند دیگر افراد کی قبروں کو مسمار کرکے‬ ‫زمین کے برابر کردیا اور قبروں کو بری طرح‬ ‫کھود ڈال اور وہاں سوائے گڑھے کے کچھ نہ‬ ‫چھوڑا، یعنی ہڈیاں تک بھی اٹھالے گئے۔ اس‬ ‫طرح مجاو ر ِ خانقا ہ ِ تھانویہ کی ذراسی کوتاہی‬ ‫نے جناب اشرفعلی تھانوی صاحب کی مٹی تو‬ ‫خراب کی ہی لیکن اس طرح وہ خود اپنی بھی‬‫مٹی خراب کر بیٹھے۔ جب مٹی کی بات چل نکلی‬‫ہے تو دیوبندیوں کے امام اسماعیل دہلوی صاحب‬‫کا فتو ی ٰ بھی ملحظہ ہوجائے۔ وہ فرماتے ہیں کہ‬ ‫معاذ اللہ انبیاءکرام بھی “ م ر کر مٹی میں مل‬ ‫جاتے ہیں” ، تو اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا‬‫اشرفعلی تھانوی صاحب معاذ اللہ ثم معاذ اللہ‬ ‫انبیاءکرام سے بڑھ کر تھے کہ ان کی قبر میں‬
  35. 35. ‫مٹی کے ڈھیر کے علوہ کچھ اور بھی بچا ہو۔‬ ‫بہر حال اپنی جھینپ مٹانے کے لئے نجم الحسن‬ ‫تھانوی صاحب نے اس عمل کو “ مزا ر ” کی بے‬ ‫حرمتی قرار دیتے ہوئے حکوم ت ِ ہند سے سخت‬ ‫احتجاج کیا ہے اور ہندو دہشت پسند تنظیم آر۔‬ ‫ایس۔ایس ) ر ا شٹری ا سیوک سنگ ھ ( کو اس‬ ‫“ گھناؤنے ” کام کا ذمہ دار ٹھہراکر مجرموں کو‬ ‫قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔‬ ‫تعجب انگیز امر یہ ہے کہ جب 6291 ءمیں‬ ‫نجدیوں نے جنت المع ل ّی، جنت البقیع، شہدائے‬ ‫احد، اور طائف میں صحابہ کرام، تابعین، تبع‬ ‫تابعین، ائمہ کرام، اہ ل ِ بیت، جید ائمہ امت‬ ‫محمدیہ، محدثین، فقہا اور صلحائے امت کے‬ ‫مزارات تاخت و تاراج کئے اور ان پر گدھوں کے‬‫ہل چلوائے ) م ع ا ذ الل ہ ( اس وقت دیوبندی امت کے‬ ‫تمام علماءمہر لب تھے بلکہ انہوں نے نجدیوں‬‫کے بادشاہ کو فتح مکہ مکرمہ و مدینہ منورہ پر‬ ‫مبارکباد کے خطوط اور تار روانہ کئے تھے۔‬
  36. 36. ‫) ح و ال ہ کے لئے ملحظہ ہ و : تبلیغی جماعت۔‬ ‫مصنفہ علمہ ارشد القادر ی ( ۔ امت محمدیہ کے‬ ‫ان نہایت مقدس بزرگ و برتر شخصیات کے‬ ‫ٔ‬ ‫مزارات کے انہدام سے دیوبندی حضرات کے جذبہ‬ ‫ایمانی کو کوئی ٹھیس نہ پہنچی تو آج “ غی ر‬ ‫معروف مزارات ” کے اکھاڑدینے پر واویل کیسا؟‬‫بہت سے لوگوں کو تو یہ خبر پڑھ کر بھی حیرت‬‫ہوئی کہ ان حضرات کے بھی مزارات ہوسکتے ہیں‬ ‫کہ جنہوں نے زندگی بھر مزار تعمیر کرنے کو‬‫حرام اور مزارا ت ِ اولیاءپر حاضری دینے والوں کو‬‫“ مزار پرست” ، “ قبروں کے پجاری ” کہہ کر مشرک‬ ‫ہونے کے فتوے جاری کئے۔‬ ‫ایں چہ شور بست کہ در دور قمر بینم !‬ ‫ادھر پاکستان میں تھانوی صاحب کے کچھ‬ ‫متبعین یہ شور مچارہے ہیں کہ تھانوی صاحب‬ ‫تحری ک ِ پاکستان کے عظیم رہنما تھے اس لئے‬‫حکوم ت ِ پاکستان کو اس واقعہ پر ہندوستان سے‬
  37. 37. ‫احتجاج کرنا چاہئے۔ اس سلسلے میں انہی کے ہم‬‫مسلک ڈاکٹر سلمان شاہجہانپوری کا حوالہ یہاں‬‫بطور گھر کی گواہی کافی ہوگا کہ ڈاکٹر سلمان‬ ‫شاہجہان پوری، دیوبند کے مہتمم قاری محمد‬ ‫احمد ابن قاسم نانوتوی کی طرف سے انگریز‬‫گورنر یوپی کے خطبہ استقبالیہ کے متن کا حوالہ‬ ‫دیتے ہوئے تحریر کرتے ہی ں :‬ ‫“ غو ر فرمایئے یہ ) د یوبند ی ( حضرات نصیب کی‬‫یاوری پر فخر کررہے ہیں اور کس زندگی کو “ گ م‬ ‫نامی اور تاریکی کی قعرمذل ت ” قرار دے رہے‬ ‫ہیں؟ علوم و فنو ن ِ اسلمی کی تعلیم و تدریس‬‫اور اس کی اشاعت کو؟ صبح و شام “ قا ل اللہ و‬ ‫قال الرسول ” ) ع ز وج ل و صلی اللہ تعال ی ٰ علیہ‬ ‫وسل م ( کے ورد کو اور اعما ل ِ اسلمی کو؟ اور‬‫کس چیز کو “ باع ث ِ ممنونیت و سعادت ” قرار دے‬ ‫رہے ہیں؟ ) ا ن گریزوں کی خوشامد اور غلمی‬‫کو ؟ ( مزید حیرت اس بات پر ہے کہ ان کے اخلف‬‫کا دعو ی ٰ ہے کہ ملک کی آزادی کی جنگ میں ان‬
  38. 38. ‫کا حصہ ہے اور پاکستان کا قیام ان کی کوششوں‬ ‫کا رہی ن ِ م ن ّت ہے ۔ ” ) ت ح قیق ی مقالہ “ مولنا عبید‬‫اللہ سندھی کا دیوبند سے اخراج۔۔۔ پس منظر کے‬ ‫واقعات پر ایک نظر ” ماہنامہ الولی، حیدر آباد،‬ ‫سندھ۔ اگست 1991 ءتا نومبر 1991 ء (‬ ‫حیرت انگیز بات یہ ہے کہ دیوبندی علماءو‬ ‫اسکالرز اپنے عظیم عالم اشرفعلی تھانوی‬‫صاحب کے بابائے قوم کے نام لکھے گئے جس خط‬ ‫کو علمائے دیوبند کی تحری ک ِ پاکستان میں مثبت‬ ‫کردار کے ثبوت کے لئے بطو ر ِ سند استعمال کرتے‬ ‫چلے آئے ہیں وہ بھی انہی کے ایک محقق جناب‬ ‫پروفیسر محمد شمیم غازی تھانوی، مقیم‬ ‫کراچی، کی تحقیق کے مطابق قطعی جعلی ہے۔‬ ‫) ت فص ی ل کے لئے ملحظہ ہو اخبار روزنامہ جنگ،‬ ‫کراچی۔ مورخہ 42 اپریل 5002 ء، کالم “ روز ن ِ‬ ‫دیوار سے” ۔ کالم نگا ر : عطاءالحق قاسم ی (‬
  39. 39. ‫“ مزا ر ” تھانوی کے مجاور نے مزید ستم یہ ڈھایا‬‫ہے کہ اب جبکہ وہاں قبروں کی جگہ بقول ان کے‬ ‫صرف گڑھے رہ گئے ہیں تو وہ ان خالی گڑھوں‬ ‫پر دوبارہ جھوٹی اور جعلی قبریں اور مزارات‬ ‫بنارہے ہیں تو اب کیا فرماتے ہیں علمائے دیوبند‬ ‫اس سلسلہ میں؟‬ ‫حیرت کی بات یہ ہے کہ 71 دسمبر 6002 ء) ہ ف ت ہ‬ ‫اور اتوار کی ش ب ( یہ چھ قبروں اور احاطہ کی‬ ‫مسماری اور باقاعدہ کھدائی کی کاروائی یقینا‬ ‫ایک درجن سے زائد تجربہ کار مزدوروں نے کی‬ ‫ہوگی لیکن اس کی کانوں کان خبر نہ پڑوس‬‫میں رہنے والے مجاور/ مہتمم صاحب کو ہوئی اور‬ ‫نہ اردگرد کے لوگوں کو ہوئی اور نہ ہی اتنی‬‫بڑی جماعت کو مع اوزار/ کدال/ بیلچہ وغیرہ آتے‬‫ہوئے اور بھاگتے ہوئے کسی نے دیکھا۔ اس سے یہ‬ ‫ظاہر ہوتا ہے کہ آنے والے “ شرپسن د ” گھر کے ہی‬ ‫بھیدی تھے اس لئے وہ پہچانے نہیں گئے اور وہ‬ ‫بڑے اطمینان سے اپنی کاروائی کرکے “ فاتحان ہ ”‬
  40. 40. ‫انداز میں چہل قدمی کرتے ہوئے اپنے اپنے‬ ‫“حجروں” میں چلے گئے۔‬‫ہم اہ ل ِ سنت و جماعت تو ابتداءہی سے‬ ‫مومن کی عزت و حرمت اور مزارا ت ِ اولیاءاور‬ ‫مومن کی قبر کے تقدس کے قائل ہیں۔ ہمیں‬ ‫جناب نجم الحسن صاحب سے بھی ہمدردی ہے‬ ‫کہ ان کی خانقاہ کو ظلم و بربریت کے ساتھ‬‫اجاڑ کر ان کو بے روزگار کردیا گیا، لیکن اس کے‬‫علوہ اور ہم کہہ بھی کیا سکتے ہیں کہ ایں ہمہ‬ ‫آوردہ تس ت! اور پھر یہ کہ ع‬ ‫ہم اگر عرض کریں گے تو شکایت ہوگ ی!‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫6002 ,8 ‪December‬‬ ‫شیخ محمد بن عبد الوہاب نجدی‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, وہابی ازم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 11:08 pm‬‬
  41. 41. ‫شیخ محمد بن عبد الوہاب نجدی 3071 ھ 5111‬‫ع تا 2971 ھ 2061 ع بارھویں صدی کی ابتداء‬ ‫میں پیداہوئے ، ان کی شخصیت نے ملت اسلمیہ‬‫میں افتراق اور انتشار کا ایک نیا دروازہ کھول ،‬ ‫اہل اسلم می ں ‌کتاب و سنت کے مطابق جو‬‫معمولت صدیوں سے رائج تھے ، انہوں نے ان کو‬‫کفر اور شرک قرار دیا ، مقابر صحابہ اور مشاہد‬ ‫و مآثر کی بے حرمتی کی ، قبہ جات کو مسمار‬ ‫کیا ، رسومات صحیحہ کو غلط معنی پہنائے اور‬ ‫ایصال ثواب کی تمام جائز صورتوں کی غلط‬ ‫تعبیر کرکے انہیں الذبح لغیر اللہ اور النزر لغیر‬ ‫اللہ کا نام دیا ، توسل کا انکار کیا اور انبیاء‬ ‫کرام علیہم السلم اور صلحاء امت سے استمداد‬ ‫اور استغاثہ کو یدعون من دون اللہ کا جامہ‬ ‫پہناکر عبادت لغیراللہ قرار دیا ، انبیاء علیہم‬ ‫السلم ، ملئکہ کرام ، اور حضور تاجدار مدنی‬‫محمد مصط ف ٰی صلی اللہ علیہ وسلم سے شفاعت‬ ‫طلب کرنے والو ں ‌کے قتل اور ان کے اموال لوٹنے‬
  42. 42. ‫کو جائز قرار دیا۔‬‫شیخ نجدی نے جس نئے دین کی طرف لوگوں کو‬‫دعوت دی ، وہ عرف عام میں وہابیت کے نام سے‬ ‫مشہور ہوا اور ان کے پیروکار وہابی کہلئے‬ ‫چنانچہ خود شیخ نجدی کے متبعین اپنے آپ کو‬ ‫برمل وہابی کہتے اور کہلتے ہیں چنانچہ علمی‬ ‫طنطاوی نے لکھا ہے :‬ ‫امامحمد ، فھو صاحب الدعوۃ التی عرفت‬ ‫بالوھابیۃ‬‫) محمد بن عبد الوہاب نے جس تحریک کی دعوت‬ ‫دی تھی ، وہ وہابیت کے نام سے معروف ہے (۔۔‬ ‫) شیخ علی طنطناوی جوہری مصری متفوفی‬‫8531 ھ ، محمد بن عبد الوہاب نجدی صفحہ 31‬ ‫(‬ ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫6002 ,12 ‪November‬‬ ‫کش ف ِ راز نجدیت‬
  43. 43. ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, دیوبندی ازم —‬ ‫‪sulemansubhani @ 12:11 am‬‬ ‫بسم اللہ الرح م ٰن لرحیم‬‫الصل و ٰۃوالسلم علیک یارسول اﷲ وعل ی ٰ الک‬ ‫واصحابک یاحبیب اﷲ‬ ‫کش ف ِ راز نجدیت‬ ‫نجدیا سخت ہی گندی ہےطبیعت تیری‬ ‫کفر کیا شرک کا فضلہ ہےنجاست تیری‬ ‫خاک منھ میں ترےکہتا ہےکسےخاک کا ڈھیر‬ ‫م ِٹ گیا دین ملی خاک میں عزت تیری‬ ‫تیرےنزدیک ہوا کذ ب ِ ا ل ٰہی ممکن‬ ‫تجھ پہ شیطان کی پھٹکار یہ ہمت تیری‬ ‫بلکہ کذاب کیا تو نےتو اقراروقوع‬ ‫ا ُف رےناپاک یہاں تک ہےخباثت تیری‬ ‫علم شیطاں کا ہوا عل م ِ نبی سےزائد‬‫پڑھوں لحول نہ کیوں دیکھ کےصورت تیری‬ ‫بز م ِ میلد کانا کےجنم سےبدتر‬ ‫ارےاندھےارےمردود یہ جراءت تیری‬
  44. 44. ‫عل م ِ غیبی میں مجانین و بہائم کا شمول‬ ‫کفرآمیز جنوں زا ہے ج َہالت تیری‬‫یا د ِ خ ُر سےہو نمازوں میں خیال ا ُنکا ب ُرا‬ ‫ا ُف جہنم کےگدھے ا ُف یہ خرافت تیری‬ ‫ا ُن کی تعظیم کرےگا نہ اگر وق ت ِ نماز‬ ‫ماری جائےگی تیرےمنھ پہ عبادت تیری‬‫ہےکبھی بوم کی ح ِ ل ّت تو کبھی زاغ حلل‬‫جیفہ خوری کی کہیں جاتی ہےعادت تیری‬‫ہنس کی چال تو کیا آتی گئی اپنی بھی‬ ‫اجتہادوں ہی سےظاہر ہےحماقت تیری‬‫کھلےلفظوں میں کہےقاضی شوکاں المدد‬‫یا علی س ُن کےبگڑ جاتی ہےطبیعت تیری‬ ‫تیری اٹکےتو وکیلوں سےکرےاستمداد‬ ‫اور طبیبوں سےمدد خواہ ہو ع ل ّت تیری‬ ‫ہم جو اللہ کےپیاروں سےاعانت چاہیں‬ ‫شرک کا چ ِرک ا ُگلنےلگی ملت تیری‬ ‫عب د ِ وہاب کا بیٹا ہوا شی خ ِ نجدی‬ ‫اس کی تقلید سےثابت ہےضللت تیری‬
  45. 45. ‫ا ُسی مشرک کی ہےتصنیف کتا ب ُ التوحید‬ ‫جس کےہر فقرہ پہ ہے م ُہ ر ِ صداقت تیری‬‫ترجمہ اس کاہوا دھکۃ الیما ن ) تقویۃ الیمان (‬ ‫نام‬ ‫جس سےبےنور ہوئی چش م ِ بصیرت تیری‬ ‫واق ف ِ غیب کا ارشاد سنائوں جس نی‬ ‫کھولدی تجھ سےبہت پہلےحقیقت تیری‬ ‫زلزلےنجد میں پیدا ہوں،فتن برپا ہوں‬ ‫یعنی ظاہر ہو زمانےمیں شرارت تیری‬ ‫ہو ا ِسی خاک سےشیطان کی سنگت پیدا‬ ‫دیکھ لےآج ہےموجود جماعت تیری‬ ‫سر م ُنڈےہوں گےتو پاجامےگھٹنےہونگی‬ ‫سر سےپا تک یہی پوری ہےشباہت تیری‬ ‫ا ِ د ّعا ہوگا حدیثوں پر عمل کرنےکا‬ ‫نام رکھتی ہےیہی اپنا جماعت تیری‬ ‫ا ُن کےاعمال پہ رشک آئےمسلمانوں کو‬ ‫ا ِس سےتو شاد ہوئی ہوگی طبیعت تیری‬ ‫لیکن ا ُترےگا نہ قرآن گلوں سےنیچی‬
  46. 46. ‫ابھی گھبرا نہیں باقی ہےحکایت تیری‬ ‫نکلیں گےدین سےیوں جیسےنشانہ سےتیر‬ ‫آج اس تیر کی نخچر پہ ہےسنگت تیری‬ ‫اپنی حالت کو حدیثوں کےمطابق کرلی‬ ‫آپ کھل جائیگی پھر تجھ پہ خباثت تیری‬ ‫چھوڑ کر ذ ِکر ترا ا َب ہےخطاب اپنوں سی‬ ‫کہ ہےمبغوض مجھےدل سےحکایت تیری‬ ‫! م ِرےپیارے م ِرےاپنے م ِرے س ُ ن ّی بھائی‬ ‫آج کرنی ہےمجھےتجھ سےشکایت تیری‬‫تجھ سےجو کہتا ہوں تو د ِل سے س ُن انصاف بھی‬ ‫کر‬ ‫کرےاللہ کی توفیق حمایت تیری‬ ‫گر ت ِرےباپ کو گالی دےکوئی بےتہذیب‬ ‫غ ص ّہ آئےابھی کچھ اور ہو حالت تیری‬ ‫گالیاں دیں ا ُنہیں شیطا ن ِ لعین کے پ َیرو‬ ‫ج ِن کےصدقےمیں ہےہر د َولت و نعمت تیری‬ ‫جو تجھےپیار کریں جو تجھےاپنا فرمائیں‬ ‫جن کے د ِل کو کرےبےچین اذیت تیری‬
  47. 47. ‫جو ت ِرےواسطےتکلیفیں اٹھائیں کیا کیا‬ ‫اپنےآرام سےپیاری جنہیں صورت تیری‬ ‫جاگ کر راتیں عبادت میں جنہوں نےکاٹیں‬ ‫کس لئے؟ ا ِس لئےکٹ جائےمصیبت تیری‬ ‫حشر کا دن نہیں جس روز کسی کا کوئی‬ ‫اس قیامت میں جو فرمائیں شفاعت تیری‬ ‫ا ُن کےدشمن سےتجھے ر َبط رہےمیل رہی‬ ‫شرم اللہ سےکر کیا ہوئی غیرت تیری‬ ‫تو نےکیا باپ کو سمجھا ہےزیادہ ا ُن سی‬ ‫جوش میں آئی جو ا ِس درجہ حرارت تیری‬‫ا ُن کےدشمن کو اگر تو نےنہ سمجھا د ُشمن‬ ‫وہ قیامت میں کریں گےنہ رفاقت تیری‬‫ا ُن کے د ُشمن کا جو دشمن نہیں سچ کہتاہوں‬ ‫دعو ی ٰ بےاصل ہےجھوٹی ہےمحبت تیری‬ ‫بلکہ ایمان کی پوچھےتو ہےایمان یہی‬ ‫ا ُن سےعشق ا ُن کےعدو سےہو عداوت تیری‬ ‫ا َہ ل ِ س ُ ن ّت کا عمل تیری غزل پر ہو حسن‬‫جب میں جانوں کہ ٹھکانےلگی محنت تیری‬
  48. 48. ‫‪Leave a Comment‬‬ ‫6002 ,02 ‪November‬‬ ‫حسام الحرمین کی حقانیت و صداقت و ثقاہت‬ ‫‪ ,Filed under: Home‬ہوم, اہلسنت والجماعت, امام‬ ‫احمد رضا خان, دیوبندی ازم — @ ‪sulemansubhani‬‬ ‫‪11:42 pm‬‬‫وہ رضا کےنیزےکی مار ہےکہ عدو کےسینےمیں غار‬ ‫ہے ٭‬ ‫کسےچارہ جوئی کا وار ہےکہ یہ وار وار سےپار‬ ‫ہے‬ ‫حسام الحرمین کی حقانیت و صداقت و ثقاہت‬ ‫الشہاب الثاقب و المہند کی بےبسی و پسپائی‬ ‫اور ناکامی‬ ‫کلک رضا ہے خنجر خونخو ار برق بار‬ ‫اعداء سے کہد و خیر منائیں نہ شر کریں‬ ‫الحمد اللہ ثم الحمد اللہ !‬‫گستاخان رسول ، منکرین ضروریات دین ، باغیان‬
  49. 49. ‫ختم نبوت کےخلف اکابر و مشاہر علماءو‬‫فقہاءعرب وعجم و اعاظم مفتیان حرمین طیبین‬‫کےحکم شرعی فتاو ی ٰ حسام الحرمین عل ی ٰ منحر‬ ‫الکفر والمین کو شائع ہوئےایک سو سال‬‫ہوگئےاور حسام الحرمین کا پرچم پوری آب و تاب‬‫اور جاہ جلل کےساتھ لہرارہا ہےاور خرمن باطل‬ ‫و اہل ارتداد پر برقبار ہے۔‬ ‫یاد رکھنا چاہئےاور ذہن نشین کر لینا چاہئےکہ‬ ‫سیدنا امام اہلسنت سرکار اعل ی ٰ حضرت مجدد‬‫دین و ملت شیخ السلم والمسلمین مولنا الشاہ‬ ‫احمد رضا خاں صاحب فاضل بریلوی رضی اللہ‬ ‫عنہ نےکسی پر بل وجہ خواہ مخواہ تکفیر کا‬‫حکم جاری نہیں فرمایا جو عناصر تنقیص الوہیت‬ ‫توہین رسالت اور انکار ختم نبوت کےمرتکب اور‬‫منکر ضروریات دین ثابت ہوئےانہیں پہلےہر شرعی‬ ‫رعایت دی گئی ا ُن کو انکےاقوال کفریہ قطعیہ‬ ‫اور گستاخانہ عبارات سےبذریعہ خطوط مطلع‬‫اور آگاہ کیا گیا بار بار رجسٹریاں بھیج کر مطلع‬
  50. 50. ‫اور آگاہ کیا گیا گستاخانہ کفریہ عبارات سےتوبہ‬ ‫اور رجوع کی تلقین فرمائی گئی ،‬‫آمنےسامنےبیٹھ کر گفتگو کی دعوت دی گئی مگر‬ ‫اہل توہین و تنقیص زمین پکڑ گئےدین کےمسئلہ‬ ‫کو عزت نفس کا مسئلہ بنالیا ، انانیت پر اتر‬ ‫آئےضد و ہٹ دھرمی کو نصب العین بنالیا ناچار‬ ‫مجدداعظم اعل ی ٰ حضرت امام اہلسنت قدس‬ ‫سرہ نےفرمایا‬ ‫اف رے منکر یہ بڑھا جوش تعصب آخر‬ ‫بھیڑ میں ہاتھ سےکمبخت کےایمان گیا‬ ‫اور تم پر مرےآقا کی عنایت نہ سہی‬ ‫نجدیو کلمہ پڑھانےکا بھی احسان گیا‬‫امام المحتاطین امام اہلسنت اعل ی ٰ حضرت رضی‬ ‫اللہ عنہ نےاپنی طرف سےکچھ فرمانےاور‬ ‫لکھنےکےبجائےتحذیر الناس ، براہین قاطعہ ،‬ ‫حفظ الیمان ، فتو ی ٰ گنگوہی وغیرہ کی اصل‬ ‫بعینہ عبارات اکابر و اعاظم علماءو‬‫فقہاءحرمین طیبین کےسامنےرکھ کر حکم شرعی‬
  51. 51. ‫طلب کیا اور توہین پر تکفیر ہوئی اگر کوئی‬‫توہین نہ کرتا تکفیر نہ ہوتی اور اگر اہل توہین و‬ ‫تنقیص توبہ و رجوع کرلیتےتو بھی تکفیر نہ‬‫ہوتی مگر آہ افسوس کہ توبہ اور رجوع کرنا ان‬ ‫کےمقدر میں نہ تھا تو اہل توہین کی توہین‬ ‫آمیزگستاخانہ کفریہ عبارات پر تکفیر کا حکم‬ ‫شرعی حسام الحرمین کی صورت میں اکابر‬ ‫علماءحرمین کی طرف سےجاری ہوا‬ ‫نہ تم توہین یوں کرتےنہ ہم تکفیر یوں کرتے‬ ‫نہ لگا کفر کا فتو ی ٰ نہ یوں رسوائیاں ہوتیں‬ ‫نہ توہین کرتے نہ تکفیر ہوتی‬ ‫رضا کی خطا اس میں اغیار کیا ہی‬ ‫53 جلیل القدر اکابر و اعاظم علماءو‬‫فقہاءحرمین طیبین نےاہل توہین کی اصل کتابیں‬ ‫دیکھ کر مترجمین سےاردو سےعربی میں ترجمہ‬‫کرواکر حکم شرعی واضح فرمایا ۔مخالفین کا یہ‬ ‫کہنا ایک حیلہ اور بہانہ بلکہ بد ترین فریب و‬ ‫فراڈ ہےکہ علماءحرمین طیبین ارد و نہیں‬
  52. 52. ‫جانتےتھےدھوکہ دیکر فتو ی ٰ لیا ۔ یہ اہل توہین‬ ‫ہندی و انگریزی مولوی کٹی پٹی عربی‬‫جانتےہیں ، تو کیا علماءحرمین ہر سال کثیر تعداد‬‫میں ہندوستان سےحج کیلئےجانےوالےعلماءو عوام‬ ‫سےملکر اردو زبان سےواقف نہ ہوں گےاور کیا‬ ‫انہیں تکفیر جیسا نازک و حساس فتو ی ٰ‬ ‫لکھتےوقت مترجم میسرنہ آیا ہوگا اتنےعظیم‬ ‫متبحر و تجربہ کار کہنہ مشق مفتیان کرام اور‬ ‫وہ بھی اہل حرم اکابر کو کوئی دھوکہ و‬ ‫مغالطہ کس طرح دےسکتا ہے۔‬ ‫: : الشھاب الثاقب و المھند : :‬ ‫کےمرتبین و مصنفین نےضرور اپنےاکابر کی‬‫عبارات میں کتر بیونت و ترمیم و تحریف کی اور‬ ‫مذکورہ بال کتب میں اپنےاکابر کی عبارات کا‬ ‫حلیہ بگاڑ کر نقل کیں علماءو عوام کو مغالطہ‬ ‫اور صریح ا َ دھوکہ دیا جس کا دل چاہےدودھ کا‬ ‫دودھ پانی کا پانی کرکےدیکھ لے، اکابر دیوبند‬ ‫کی گستاخانہ کتب اور توہین آمیز عبارات‬
  53. 53. ‫تحذیرالناس ، براہین قاطعہ ، حفظ الیمان ،‬‫فتو ی ٰ گنگوہی وقوع کذب کی پہلےحسام الحرمین‬ ‫سےمطابقت کرلیں اور پھر المہند والشہاب‬‫الثاقب سےمطابقت کرلیں صاف طور پر واضح ہو‬ ‫جائےگا کہ المہند و الشہاب الثاقب میں انہوں‬ ‫نےخود اپنےاکابر کی عبارات کفریہ کا حلیہ بگاڑ‬‫کر نقل کیں اور خود خیانت و بد دیانتی کی مثال‬ ‫قائم کی ۔‬ ‫یاد رکھنا چاہئےکہ جب حسام الحرمین پر‬ ‫علماءحرمین طیبین دھوم دھام سےڈنکےکی‬ ‫چوٹ تصدیقات فرمارہےاور تقریظات لکھ‬ ‫رہےتھےتو بےچارہ مصنف المہند مولوی خلیل‬ ‫انبیٹھوی سہانپوری وہیں تھا اور کانگریسی‬ ‫گاندھوی مدنی مولوی حسین احمد اجودھیا‬ ‫باشی ٹانڈوی بھی وہیں حجاز مقدس میں رہتا‬ ‫تھا سیدنا اعل ی ٰ حضرت امام اہلسنت مجدد دین‬ ‫و ملت فاضل بریلوی رضی اللہ عنہ کی جللت‬ ‫علمی تاب نہ لسکتےتھےوہیں آمنےسامنےگفتگو‬
  54. 54. ‫کیوں نہ کرلی اسی وقت علماءحرمین کو حسام‬‫الحرمین پر تقریظات لکھنےسےمنع کیوں نہ کردیا‬ ‫کہ جناب یہ دھوکہ دیا جارہا ہےمگر وہاں تو یہ‬ ‫لوگ لب باندھےدم سادھےرہےمولوی خلیل‬ ‫انبیٹھوی چھپ چھپاکر چند اشرفیاں بطور‬ ‫رشوت دیکر اپنا الو سیدھا کرنےکےلئےرئیس‬ ‫العلما ءمولنا شیخ صالح کمال کی خدمت میں‬ ‫حاضر ہوا کہ حضور آپ مجھ سےناراض ہیں ،‬ ‫ئیس العلما ءنےفرمایا تیرا نام خلیل انبیٹھوی‬ ‫ہے؟ مولنا صالح کمال نےفرمایا میں تو‬ ‫تجھےزندیق لکھ چکا ہوں انبیٹھوی نےکہا جو‬ ‫باتیں میری طرف نسبت کی گئی ہیں وہ میری‬ ‫کتاب میں نہیں لوگوں نےمجھ پر افترا کیا ۔‬ ‫مولنا صالح کمال نےفرمایا تمہاری کتاب براہین‬ ‫قاطعہ چھپ کر شائع ہو چکی ہے، مولوی خلیل‬ ‫انبیٹھوی نےمجبور ا َ کہا حضرت کیا کفر سےتوبہ‬‫قبول نہیں ہوتی ، مولنا نےفرمایا ہوتی ہےمولوی‬ ‫انبیٹھوی اپنی براہین کی کفریہ عبارات سےتوبہ‬
  55. 55. ‫کا وعدہ کرکےجدہ بھاگ گئےاور تین سال بعد‬ ‫جوڑ توڑ اور ہیرا پھیری کرکےاپنےتمام اکابر ہند‬ ‫کےتعاون و تصدیقات سےالمہند نامی بزعم خود‬‫حسام الحرمین کےرد میں لکھ مارا جو از اول تا‬ ‫آخر سراپا کذب صریح جھوٹ اور دروغگوئی کا‬ ‫بد ترین نمونہ ہے۔ مولوی خلیل انبیٹھوی‬‫نےاپنےخالص وہابیانہ عقائد کو چھپایا اور خلف‬‫واقع اپنےعقائد سنیوں کےسےظاہر کئےوہابیوں اور‬ ‫محمد بن عبد الوہاب نجدی کو سخت برا بھل‬‫گستاخ و مکفر اور علماءاہلسنت کا قاتل قرار دیا‬‫۔میلد تو میلد سواری کےگدھےکےپیشاب کا تذکرہ‬ ‫بھی اعل ی ٰ درجہ کا مستحب قرار دیا۔خود کو‬‫سنی ظاہر کرکےوہابیوں پر سخت لعن و طعن کیا‬ ‫، گویا وہابی ان کےسوا کوئی اور ہے، المہند‬ ‫کےسوال بھی خود گڑھےاور فریب کاریوں‬ ‫کےخول چڑھا کر مغالطہ آمیز جواب بھی خود‬ ‫ہی دیئے، اعل ی ٰ حضرت قدس سرہ نےحسام‬ ‫الحرمین پر 53 مسلمہ اکابر علماءحرمین کی‬
  56. 56. ‫تصدیقات حاصل کی تھیں ۔ جبکہ خلیل انبیٹھوی‬ ‫صاحب سر دھڑ کی بازی لگاکر بمشکل 6‬‫علماءکی تصدیقات المہند پر حاصل کرسکا ، جن‬ ‫میں 2 حضرات مولنا سید محمد مالکی اور‬ ‫مولنا محمد علی بن حسین نےاپنی تصدیقات‬ ‫واپس لےلیں ان میں ایک مولنا شیخ محمد‬ ‫صدیق افغانی تھےعلماءحرم سےنہ تھے۔ باقی‬ ‫بھرتی ہندی وہابی مولویوں کی تھی اور سب‬‫سےبڑی بات یہ کہ المہند میں اپنےاکابر کی اصل‬‫کفریہ عبارات بعینہ و بلفظہ نقل نہ کیں ، مقام‬ ‫غور و لمحہ فکریہ ہے۔‬ ‫محترم حضرات !! المہند کا بغور مطالعہ کریں‬‫اور دیکھیں کہ وہابیوں اور محمد بن عبد الوہاب‬‫شیخ نجدی کو کتنا برا بھل کہا گیا ہے، یہ مکاری‬ ‫اور عیاری تھی خلیل انبیٹھوی کی ۔وہابیوں اور‬ ‫شیخ نجدی کےمتعلق اصل حقیقی رائےوہ ہےجو‬ ‫انہوں نےاپنےدو مکتوبات ) خ طو ط ( محررہ 22‬ ‫ربیع الثانی 5431 ھ اور محررہ ماہ رجب‬
  57. 57. ‫المرجب 5431 ھ کتاب اکابر کےخطوط صفحہ‬‫11, 21 پر مولوی محمد زکریا سابق امیر تبلیغی‬ ‫جماعت کےنواسےمولوی محمد شاہد مظاہری‬ ‫نےشائع کئےاور ماہنامہ النو ر تھانہ بھون ماہ‬ ‫رجب 5431 ھ میں مولوی اشرفعلی تھانوی‬‫دیوبندی نےصفحہ 32 پر شائع کئے۔جن میں محمد‬ ‫بن عبد الوہاب شیخ نجدی اور نجدی وہابی‬ ‫سعودی حکومت اور انکےعلماءکی بھر پور‬ ‫قصیدہ خوانی کی گئی ہےاور والہانہ خراج‬ ‫عقیدت پیش کیا گیا ہے۔دیوبندی ، وہابی مفرور‬ ‫مناظر مولوی منظور سنبھلی نےبھی مولوی‬‫انبیٹھوی صاحب کےیہ خط اپنی کتاب شیخ محمد‬ ‫بن عبد الوہاب اور ہندوستان کےعلماءحق‬‫کےصفحہ 34 پر نقل کرکےان کےمستند ہونےپر مہر‬ ‫تصدیق ثبت کردی ہے‬ ‫مولوی انبیٹھوی اور مولوی ٹانڈوی‬ ‫دونو ں جنہوں نےبزعم خود و بزعم جہالت‬ ‫حسام الحرمین کا نام نہاد برائےنام رد لکھ کر‬
  58. 58. ‫حقیقت و صداقت کا منہ چڑایا مولوی خلیل‬ ‫انبیٹھوی اور مولوی حسین احمد کانگریسی‬ ‫ٹانڈوی ا ُن دنوں وہیں حرمین شریفین میں‬ ‫موجود تھےدیکو ملفوظات اعل ی ٰ حضرت پہل‬ ‫حصہ بلکہ خود شکست خوردہ مفرور مناظر‬ ‫مولوی منظور سنبھلی مدیر الفرقان نےبھی‬ ‫تسلیم کیا ہےکہ مولوی خلیل انبیٹھوی ان دنوں‬‫حرم مکہ معظمہ میں تھا اور تسلیم کیا ہےکہ “‬ ‫حضرت مولنا حسین احمد مدنی جو 6131 ھ‬ ‫سے 3331 ھ تک مسلسل 81,71 سال مدینہ‬‫منورہ میں مقیم رہےتو ان دونوں حضرات نےوہیں‬ ‫امام اہلسنت اعل ی ٰ حضرت مجدد و دین و ملت‬‫فاضل بریلوی رضی اللہ عنہ سےآمنےسامنےگفتگو‬‫کیوں نہ کرلی ؟ اگر ہمت و جرات اور استعداد و‬ ‫قابلیت تھی اور کفریہ گستاخانہ عبارات‬ ‫کےبارےمیں ان کا موقف مضبوط تھا تو‬ ‫علماءحرمین طیبین کا حسام الحرمین پر‬ ‫تصدیقات کرتےتقریظات لکھنےسےکیوں نہ روک‬
  59. 59. ‫دیا مگر حقیقت یہ ہے‬ ‫تیرےاعداءمیں رضا کوئی بھی منصور نہیں‬ ‫بےحیا کرتےہیں کیوں شور بپا تیرےبعد‬ ‫المہند اور شھاب ثاقب‬ ‫میں ایک ایک فریب و فراڈ اور جعلسازی کا‬ ‫مجموعہ ہےتو دوسرا گالی نامہ ہےجس میں‬ ‫غلیظ ترین بازاری زبان استعمال کی گئی ہے۔‬‫محترم حضرات !! خود مطابقت کرلیں کہ حسام‬‫الحرمین میں جن جن اکابر و مشاہیر علماءمکہ‬ ‫مدینہ کی تصدیقات و تقریظات ہیں مزہ تو جب‬‫تھا کہ ان سب علماءسےالمہند و شہاب ثاقب پر‬‫تصدیقات حاصل کی جاتیں اور یہ لکھوادیا جاتا‬ ‫کہ ہمیں ) علماءحرمین ( کو دھوکہ و مغالطہ‬ ‫دیکر مولنا احمد رضا خاں صاحب نےنےحسام‬ ‫الحرمین پر غلط تصدیقات کروائیں اور تحذیر‬ ‫الناس ، براہین قاطعہ اور حفظ الیمان کی‬ ‫عبارات حق و عین اسلم ہیں ۔ مگر ایسا نہ‬ ‫کراسکےتو المہند اور شھاب ثاقب کو حسام‬
  60. 60. ‫الحرمین کا رد اور جواب کیسےقرار دیا جاسکتا‬ ‫ہے۔ بفضلہ تعال ی ٰ حسام الحرمین کل بھی‬‫لجواب تھا اور آج بھی لجواب ہےاور انشاءاللہ‬ ‫صبح قیامت تک لجواب رہےگا ۔‬ ‫پڑگیا ہےپشت پر اعداءکےاب کیا جائےگا‬ ‫تیرےکوڑوں کا نشاں احمد رضا خاں قادری‬ ‫چیر کر اعداء کا سینہ دل سےگزری وار پار‬ ‫تیرےنیزےکی سناں احمد رضا خاں قادری‬ ‫یاد رہےکہ المہند کا مدلل و محقق ایک جواب‬ ‫صدر الفاضل مولنا نعیم الدین مرادآبادی‬ ‫رحمۃاللہ علیہ نےالتحقیقات لدفع التلبیسات‬‫کےنام سےاور ایک قاہر رد بلیغ شیر بیشہ اہلسنت‬‫مولنا محمد حشمت علی خان صاحب رحمۃ اللہ‬ ‫علیہ نےفی الفور ا ُسی زمانےمیں لکھ کر شائع‬ ‫فرمادیا تھا اور مولوی خلیل احمد صاحب اور‬‫مولوی حسین احمد صاحب کو پہنچادیا تھا جس‬ ‫کےجواب الجواب سےمخالفین عاجز و قاصر و‬ ‫بےبس ہیں ۔‬
  61. 61. ‫:: ح سا م الحرمین والمہند کا معنی و مفہوم : :‬ ‫حسام الحرمین کا معنی ہے “ مکہ مدینہ کی تیز‬ ‫کاٹنےوالی تلوار ” “ مکہ مدینہ کی تیز تلوار ”‬ ‫) ح س ن اللغات () ا ل م نج د (‬ ‫المہند کا معنی ہے “ ہندوستانی لوہےکی تلوار ”‬ ‫) ا لم نج د (‬ ‫بھل ہندوستانی لوہےکی تلوار مکہ معظمہ اور‬‫مدینہ منورہ کی تیز کاٹنےوالی تلوار کا کیا مقابلہ‬‫کرسکتی ہے۔ تلوار اہل ایمان اہل حرمین کا ہتھیا‬ ‫رہےہندی لوگوں کا ہتھیار برچھی بھال ہے،‬ ‫برچھی بھال تلوار کا کیا مقابلہ کرسکتی ہیں ۔‬ ‫صنم کدہ ہند کےہندی لوہےکی کیا عظمت اور کیا‬ ‫قدر و قیمت ہوسکتی ہےمکہ و مدینہ کی تیز‬ ‫کاٹنےوالی تلوار کےمقابلہ میں اس کی کیا‬ ‫حیثیت ؟‬ ‫شہاب ثاقب کا معنی ہے “ آگ کا روشن شعلہ ”‬ ‫آسمان پر ٹوٹنےوال ستارہ ) ا ل منجد ، حسن‬ ‫اللغات ، فیروزللغات ، امیر اللغات ( و غ یر ہ‬
  62. 62. ‫آگ کا شعلہ مکہ مدینہ کی تیز تلوار کا کیا بگاڑ‬ ‫سکےگا ؟ آسمان سےستارےکم و بیش ہر شب‬ ‫ٹوٹتےہیں بتایا جائےان سےکتنی تلواریں کنڈم اور‬ ‫ناکارہ ہوئی ہیں اسی طرح المہند اور الشہاب‬ ‫الثاقب بھی آج تک حسام الحرمین کا کچھ نہ‬ ‫بگاڑ سکے۔‬ ‫اگر المہند اور شہاب ثاقب نےحسام الحرمین کا‬‫کچھ بگاڑا ہوتا تو جب سےابتک المہند اور شہاب‬‫الثاقب کےجتنی بھی ایڈیشن چھپےہیں، مخالفین‬ ‫کو باربار ہر بار ضمنی اور اضافی اوروضاحتی‬‫مضامین کا اضافہ کرنا پڑا ہےہمارےپاس مخالفین‬ ‫کی قابل اعتراض گستاخانہ کتابوں کےکئی کئی‬ ‫ایڈیشن ہیں اور المہند اور شھاب ثاقب کےبھی‬ ‫کئی کئی ایڈیشن ہیں جو ایک دوسرےسےمختلف‬ ‫و متضاد ہیں ، اور ان میں الفاظ و عبارات کی‬‫کمی و بیشی کی ہےجو احساس کمتری کا نتیجہ‬ ‫ہےیہ لوگ خود بھی اپنےاکابر کی کتابوں‬ ‫کےمندرجات سےمطمئن نہیں ایک مضمون میں‬
  63. 63. ‫اس بات کی تفصیل بیان کرنا ممکن نہیں ، ہاں‬ ‫اتنا ضرور کہونگا ملتان کےمکتبہ صدیقہ‬ ‫سےچھپنےوال اور کراچی کےمکتبہ تھانوی دفتر‬‫البقا سےچھپنےوال المہند کے 23,23 صفحات ہیں‬ ‫اور عرفی نام عقائد علمائےدیوبند ہےمگر اب‬ ‫کراچی اور کتب خانہ مجید یہ ملتان اور اتحاد‬‫ڈپو مدرسہ دیوبند یوپی سےجو المہند چھپا ہےان‬ ‫میں ضمنی مضامین کی بھرمار کرکےاس‬ ‫کےصفحات 881 ہیں اور نام بھی بدل دیا‬ ‫پہلےعقائد علمائےدیوبند عرفی نام تھا اور اب‬ ‫جو تین ایڈیشن نئےشائع ہوئےان کا عرفی نام “‬‫یعنی عقائد علمائےاہلسنت دیوبند ” ہے۔ مقصد یہ‬ ‫کہ کچھ بھی جس طرح بھی بن پڑےعوام کو‬ ‫دھوکہ اور مغالطہ دیکر گمراہ کیا جائے۔ یہ‬ ‫بھی چیلنج ہےہمیں بتایا جائے “ المہند ” کا یہ‬ ‫معنی یعنی عقائد علماءدیوبند یا اب عقائد‬ ‫علماءاہلسنت دیوبند کہاں اور کس کتاب میں‬‫لکھا ہے؟؟ سیدنا سرکار اعل ی ٰ حضرت رضی اللہ‬
  64. 64. ‫عنہ نےٹھیک ہی تو فرمایا تھا‬ ‫سونا جنگل رات اندھیری چھائی بدلی کالی ہے‬ ‫سونےوالوجاگتےرہیو چوروں کی رکھوالی ہے‬ ‫: : یہی حال توہین آمیز گستاخانہ کتابوں کا ہ ے : :‬‫ہمارےپاس تقویۃ الیمان ، تحذیر الناس ، براہین‬‫قاطعہ ، حفظ الیمان وغیرہ وغیرہ کےکئی کئی‬‫ایڈیشن ہیں جو ایک دوسرےسےمختلف اور متضاد‬ ‫ہیں مفہوم نہیں عبارتیں بدل گئی ہیں ۔ مگر‬‫سیدھےطریقےسےسچےدل سےپکی توبہ اور رجوع‬ ‫کرنےکی توفیق نصیب نہ ہوئی ، یہ بھی حسام‬ ‫الحرمین کی حقانیت و صداقت و ثقاہت کی‬ ‫روشن دلیل ہے، اختصار مانع ہےچند حوالہ جات‬‫ملحظہ ہوں ہمارےپاس کتب خانہ رحیمیہ دیوبند‬ ‫ضلع سہارنپور کا شائع کردہ الشہاب الثاقب‬ ‫ہےجس کے 111 صفحات ہیں مگر اب جو انجمن‬‫ارشاد المسلمین لہور نےالشہاب الثاقب کا ترمیم‬‫و اضافہ اور دلیرانہ تحریف و خیانت کےساتھ جو‬ ‫جدید ایڈیشن شائع کیا ہی،اس کےصفحات 092‬
  65. 65. ‫ہیں اور عوام کو گمراہ کرنےکےلئےجو پیوند‬‫کاریاں کیں ٹاکیاں لگائیں گالی گفتار سمیت 405‬ ‫صفحات ہیں ۔ تحذیرالناس ایک مختصر رسالہ‬ ‫تھا کتب خانہ امدایہ دیوبند اور انار کلی لہور‬‫کےتین ایڈیشن تین چھاپےعلی الترتیب 84,25,26‬ ‫صفحات کےہیں لیکن اب مکتبہ حفیظیہ‬ ‫گوجرانوالہ کےشائع کردہ جدید ایڈیشن کے 821‬ ‫صفحات ہیں جسمیں کذاب مصنف خالد محمود‬ ‫مانچسٹروی نےمقدمہ کےعنوان سےاپنی‬ ‫دوکانداری چمکائی ہے، کسی عزیر الرحمان‬‫نےطویل ترین حاشیےلکھےہیں اور شکست خوردہ‬‫مفرور مناظر کا طویل ترین مقالہ توضیح عبارات‬ ‫کےعنوان سےشامل کیا گیا ہےاور جعل سازی کی‬ ‫قابلیتیں ختم کردیں ۔یہ اعل ی ٰ حضرت مجدد دین‬‫و ملت سیدنا امام احمد رضا خاں رضی اللہ عنہ‬ ‫اور فتاو ی ٰ حسام الحرمین کی عظیم فتح و‬ ‫نصرت اور بےمثال کامیابی و کامرانی ہےکہ اہل‬ ‫توہین کی گستاخانہ کتابیں اصل شکل و صورت‬
  66. 66. ‫میں نہ رہیں اور خود مخالفین کو ان پر ترمیمات‬ ‫و تحریفات کےخول چڑھانےپڑےمگر گستاخانہ‬ ‫عبارات سےتوبہ میسر نہ آئی ۔‬ ‫:: ت و ہی ن آمیز کتابوں کی عبارتیں بدل دیں : : یہ‬‫مضمون کوئی مستقل کتاب نہیں اس لئےاختصار‬ ‫سےکام لینا پڑرہا ہےاور نور مدینہ ڈاٹ نیٹ پہ‬‫آئےہوئےدیوبندی کو ٹھنڈا کرنےکےلئےرقم کیا جارہا‬ ‫ہے۔‬‫محترم حضرات !! اب ایک نظارہ عبارتیں بدلنےکا‬ ‫بھی دیکھ لیں ۔ تقویۃ الیمان کےبیسوں‬ ‫ایڈیشنوں میں لکھا ہے “ ف یعنی میں بھی ایک‬ ‫دن مر کر مٹی میں ملنےوال ہوں ” ) میر محمد‬ ‫کتب خانہ کراچی صفحہ 75 (‬ ‫لیکن اب جدید اور دیگر مقامات‬‫سےچھپنےوالےجدید ایڈیشنوں میں لکھا ہے “ یعنی‬‫ایک نہ ایک دن میں بھی فوت ہوکر آغوش لحد‬ ‫میں جاسووں گا ” ) م ط بوع ہ جدہ صفحہ 461 (‬ ‫تحذیر الناس میں اجماع صحابہ رضوان اللہ‬
  67. 67. ‫تعال ی ٰ علیہم اجمعین اور اجماع امت کےخلف‬ ‫جوجدید معنی و مفہوم خاتم النبیین کےبیان‬ ‫کئےگئےفتاو ی ٰ حسام الحرمین کی اشاعت کےبعد‬‫تحذیر الناس کی عبارات میں بھی توبہ کرنےکی‬ ‫بجائےکم و بیش ترمیم و تحریف کی گئی مث ل َ‬ ‫المہند صفحہ 11 پر تحذیر الناس کی عبارات‬‫اصل بعینیہ و بلفظہ نقل نہ کیں خلصہ بیان کیا‬‫اور حاشا حاشا وکل کہہ کہ جھوٹ بولگیا۔اسی‬ ‫طرح شہاب ثاقب میں مولوی حسین احمد‬ ‫کانگریسی نےصفحہ 27 تا 97 تک تحذیرالناس‬‫کی عبارات کی من گھڑت و پرفریب تاویلت کی‬‫ہیں ، پیوندکاری کی ہےیہ مطلب ہےوہ مطلب ہےیہ‬‫معنی ہےوہ معنی ہےمگر اصل عبارت بلفظہ نقل‬ ‫نہ کیں بھانڈہ پھوٹ جانےپول کھل جانےکا‬ ‫اندیشہ تھا ، اور راشد کمپنی دیوبندی والوں‬‫نےتو عبارت میں من مانےالفاظ داخل کردیئےجگہ‬ ‫جگہ نانوتـ/newrelic_rpm-‘

×