Dow85 digital magazine february 2013

  • 133 views
Uploaded on

 

  • Full Name Full Name Comment goes here.
    Are you sure you want to
    Your message goes here
  • well done Saleem Bhai, excellent work and it really shows
    Are you sure you want to
    Your message goes here
    Be the first to like this
No Downloads

Views

Total Views
133
On Slideshare
0
From Embeds
0
Number of Embeds
0

Actions

Shares
Downloads
0
Comments
1
Likes
0

Embeds 0

No embeds

Report content

Flagged as inappropriate Flag as inappropriate
Flag as inappropriate

Select your reason for flagging this presentation as inappropriate.

Cancel
    No notes for slide

Transcript

  • 1. DOW 1985 DIGITAL MAGAZINEBY THE CLASS FELLOWS FOR THE CLASS FELLOWS FEBRUARY 2013 EDITORS: SALEEM A KHANANI SAMINA KHAN
  • 2. EDITORIAL Sam khan Dear class fellows and friendsWelcome to the February 2013 issue of the class digital magazine!It is nice to be connected with each other and to share our thoughts acrossthe digital world.We humans are born with clean hearts and uncluttered minds. Our souls arepure, unpolluted and raw, with very few basic needs and demands. With thepassage of time we acquire different skills to cope with our environment andourselves. As we grow up we develop increasing awareness of ourselves andthe things around us. It is an interesting phenomenon well studied bysociologists, scientists and psychiatrists.As children, we learn thousands of new things; our brains are keen to absorbinformation. Our parents, teachers, mentors and friends demonstrate to ushow to eat, behave, read and write. But this type of invaluable mentoring isnot readily available to everyone especially in poor countries where childrengrow up without any “particular” guidance from the parents or teachers.Their unique environment, experiences and exposure become their surrogatecoaches.In any case, due to influences from our surroundings and particular cultureswe eventually learn to discern different things from one another.It is then that we start “labeling” things. Probably the first label in a baby’slife is “good” or “bad”, and then starts a long, unending journey of choices,likes, dislikes, approvals and disapprovals!We then start putting tags on human beings and place them on differentshelves according to our own “classification” of what is good, bad, noble,mean, great, wise, stupid and the list goes on.Prejudice and bias are acquired qualities developed due to the subliminallessons from our environment and cultural background. With increasing age,these preferences become deeply imprinted in our minds and become a partof our belief system. They become “the norm” for us. And we don’t stophere…
  • 3. After making judgments about others we also start “expecting” them tobehave in a “certain” manner that suits “our” particular system of belief.For example, these days, in urbanized society, a “nice” son or daughtershould “fit” into a certain mould according to our specific standards. Heshould be a high achiever, someone very talented and with extremelypleasing manners.A “perfect” wife must have those qualities that suit our set of standards. Indifferent social strata this “standard” might be totally different.People belonging to South Asia would think that a perfect wife must be“obedient”, “shy” and “submissive”. She “must” know how to cook, cleanand wash, and take care of the children, the in laws and the housesimultaneously to the point of self-sacrifice.Others have a different image of a perfect wife that “includes” other idealqualities besides the above list, like being highly educated, active, stylish,presentable and working full time while taking care of her husband, childrenand in laws!And then come the “successful” men or women. We all have our own idea ofbeing “successful” and we unintentionally judge others according to thatrelative and subjective standard which for us becomes, “the gold standard”.The same goes with a “perfect husband”, a “perfect friend”, a “perfectteacher” and so on.The pattern repeats itself in the various relationships we build with othersand our roles in society. We start having very high and sometimesunrealistic “expectations” from people who come into our lives.Such prejudiced and hypercritical attitude, according to me, is one of thereasons for the moral decay in a society and mutual interactions. It causes alot of hurt and pain to the people who are “expected” to conform to a certainstandard and who do not fit into the fixed parameters of conventionalthinking.I am not sure if you all will agree with how I think but I would definitely wishthat you give a thought to what I have expressed here and check yourself ifyou too have high expectations from anyone in your life or you judge otherssomewhat harshly according to strict standards that suit your ownupbringing?It is unrealistic to expect people to be always in designer clothes.Girls growing up deserve more freedom in how they look and howthey feel about how they look. Emily proctor
  • 4. ‫ميالد النبى صل هللا عليه و سلم‬
  • 5. WE THE GRADUATES OF DMC 1985 STAND UNITED AGAINST INUSTICE DONE TO ANYONE By amjad ali dow 1985From: M.amjad Ali <amjadalid85@gmail.com>Dear friends, This sorrow and grief is unbelievable. Some Shai Hazara families whos loved ones have beeninjured and of the lost came for the protest. This grief seems like it is never ending. I believethis time words and tears will not be enough. This time, the people of Pakistan have to riseabove religious sectarian and ethnic boundaries and establish them self as a reason of humanityfirst. Justice and peace, safety of life, freedom of religion is not a privilege. These are basichuman rights and must be granted to each and every one. The country has to move forward asa force. These people have set an example that must be followed. Our love and respect tothose who died and those who are left to mourn the dead, and still have the courage to defythe extremes of nature and the worst of human nature to ask for something as simple as theright to live. Besides our Sunni brothers, Hindus and others have started to join the protest.Everyone has one thing to say to the people, justice for these innocent families.Shaykah Abudal-Azeez Ibn Baaz said there is no doubt that it is obligatory on the Muslims tounify their ranks and to unite their word on the truth and to cooperate in goodness and pietyagainst the enemies of Islam-As Allah SWT says; And hold fast together to the rope of Allahand do not become divided (Soorah Aal-Imraan 3:102). And likewise Allah has warned theMuslims against splitting up as occurs and is the most perfect saying; and do not be like thosewho differed and split up after the clear evidence came to them (Soorah Aal-Imraan 3:105) And help you one another in righteousness and piety, and do not help one another in sin and transgression (Sooratul-Maa’Idah 5:2)
  • 6. ‫‪DOWN THE MEMORY LANE‬‬ ‫ساغر صدیقی‬ ‫ہم تم جہاں ملے تھے پھولوں کی رہگزر ميں‬ ‫وہ دل نواز راہيں ہيں آج بھی نظر ميں‬ ‫کہتا ہے ہم سے روکے درد بھرا دل‬‫وہيں لے چل ميرے ہم دم کہ وہيں ہے ميری منزل‬ ‫ہاتھوں ميں ہے ابھی تک پيار کا آنچل‬ ‫ديکھا نہ ہوگا تم نے ہم سا بھی کوئ پاگل‬
  • 7. SHARED BY:Mujaddid Masood Phir Chand Niklayga - Yeh Wafaon Ka Dia Aap Ne Inaam Mujhe - Mehdi Hassan - YouTube ‫يه وفاؤن كا ديا آ پ نے انعام مجھے‬
  • 8. ‫:‪SHARED BY sam khan‬‬‫کسی ملک هيں ايک يادشاہ تھا، بڑا دانش وند، مہريان اور انصاف نسند، اشکے زمانے هيں ملک نے بہت برقی کي‬ ‫اور رعايا اس کو بہت نسند کرتی تھي، اس يات کی شہادت نہ صرف اس زمانے کے ىحکمہ اطالعات کے‬‫کنابچوه اور برنس نونو ه سے ملتی ہے يلکہ يادشاہ کی خود نشت سوابح عمری سے تھی۔شاہ دمحاہ کے زمانے هيں‬ ‫ل‬ ‫ہر طرف آزادی کا دور دورہ تھا، لوگ آزاد تھے، اور اخنار آزاد تھے، خو چاہيں کہيں خو چاہيں کھيں، نشرطيہ کو‬ ‫يادشاہ کی نعرنف هيں ہو، چالف نہ ہو۔اس يادشاہ کے زمانہ برقی اور ف توچات کنلئے ًشہور ہے، ہر طرف خوش‬‫چالی ہی خوش چالی نظر آتی تھی، کہيں يل دھرنے کو چگہ ياقی نہ تھی، خو لوگ لکھ پتی تھے، ديکھئے ديکھئے کروڑ‬‫پتی ہو گئے،حسن اپ تظام انسا تھا، کہ انير لوگ سويا ادھا لئے ادھا لئے ملک کے اس صرے سے اس صرے يک‬ ‫يلکہ نعض اوقات بيرون ملک تھي چلے چانے تھے، کسی کی ىحال نہ تھی کہ نو دھے اپنا سويا کہاه سے آيا اور‬‫کہاه لئے چارہے ہو۔روچاپ يت سے شعف تھا، کتی دورنش اسے ہواتی اڈے بر ليئے دھوڑنے چانے يا اس کي‬‫کايراتی کنلئے چلے کا پئے تھے، ط تعيت هيں عفو اور درگزر کا مادہ از چد تھا، اگر کوتی شکايات کريا تھا، کہ قاله‬ ‫شخص نے نيری قاله چايداد ہتھنالی ہے، يا قاله کارچانے بر ف تضہ کرلنا ہے، رو ىجرم خواہ يادشاہ کا کينا ہی‬ ‫كرپتی عزبز ک توه نہ ہو، وہ کمال سير حشمی سے اسے ٌعاف کرد پئے تھے، يلکہ شکاپت کرنے والوه بر خفا‬ ‫ھونے تھے، عيب خوتی بری يات ہے۔جب يادشاہ کا دل چکونت سے تھر گنا نو وہ اپتی خنک يکيں لے کر‬ ‫يارک دپنا ہوگنا اور بہاڑوه کي طرف نکل گنا، لوگ کہئے ہيں اب زيدہ ہے ۔وہللا اعبا ياابواب ابن انساء‬
  • 9. ‫‪NOTED PAKISTANI SINGER‬‬ ‫‪MEHNAZ BEGUM PASSED AWAY‬‬ ‫3102/91/10‬‫‪Sam Khan‬‬ ‫‪In fond memory of Mehnaz, the melodious voice of Pakistan, who passed away... May her soul rest in‬‬ ‫!‪eternal peace... Ameen‬‬ ‫گزچہ طْ ثبر ؿن ػؼق طے خبں گشری ہے‬‫پِز ثِی خْ ظل پہ گشرًی تِی کہبں گشری ہے‬ ‫آپ ٹِہزے ہیں تْ ٹِہزا ہے ًظبم ػبلن‬ ‫آپ گشرے ہیں تْ اک هْج رّاں گشری ہے‬ ‫ہْع هیں آئے تْ ثتالئے تزا ظیْاًہ‬ ‫ظى گشارا ہے کہبں رات کہبں گشری ہے‬ ‫زؼز کے ثؼع ثِی ظیْاًے تزے پْچِتے ہیں‬ ‫ٍّ قیبهت خْ گشارًی تِی کہبں گشری ہے‬
  • 10. Shared by farrukh hashmi
  • 11. SHARIQ ALI DOW1985
  • 12. ‫‪SHARED BY: SAM KHAN‬‬ ‫سليم كوثر‬ ‫ييرٖ ثبت ضُٕ‬ ‫ِٔ ضبرے ضًے جٕ ثيت گئے‬ ‫جت ہبں اَكبر ييں نپٹی ہٕ‬ ‫تصٕير غجبر ييں نپٹی ہٕ‬ ‫كيب ہبر گئے كيب جيت گئے‬ ‫کہيں رغتے ٹٕٹُے ٔانے ہٕں‬ ‫جتُے دكٓ ضكٓ كے ريهے تٓے‬ ‫یب اپُے چٕٓٹُے ٔانے ہٕں‬ ‫ہى ضت َے يم كر جٓيهے تٓے‬ ‫جت ہر جبَت ديٕاريں ہٕں‬ ‫أر پبؤں پڑی دضتبريں ہٕں‬ ‫اة غبيذ كچٓ ثٓی يبد َہيں‬ ‫جت ضچی ثبت پہ ہبتٓ اٹٓيں‬ ‫كجٓی ٔقت يال تٕ ضٕچيں گے‬ ‫پٓر اٹُٓے ٔانے ہبتٓ کٹيں‬ ‫آپص كے پيبر گٓرَٔذٔں كٕ‬ ‫جت جٕٓٹ ضے اصم ثذل جبئے‬ ‫گڑیٕں كے کٓيم كٓهَٕٕں كٕ‬ ‫اَصبف كٗ غكم ثذل جبئے‬ ‫گيتٕں ضے يہكتٗ كيبرٖ كٕ‬ ‫جت ايٍ كٗ راِ َہ يهتٗ ہٕ‬ ‫آَگٍ کے پٓم پٓهٕارٖ كٕ‬ ‫أر كہيں پُبِ َہ يهتٗ ہٕ‬ ‫دْرتٗ پر ايٍ كٗ خٕاہع كٕ‬ ‫کہيں ظهى كٗ آرٖ چهتی ہٕ‬ ‫يٕضى كٗ پہهٗ ثبرظ كٕ‬ ‫أر دنٕں ييں َفرت پهتٗ ہٕ‬ ‫كٍ ہبتٕٓں َے ثے حبل كيب‬ ‫كبَٹٕں ضے ثٓرے جُگم ييں اگر‬ ‫كٍ قذيٕں ضے پبيبل ہٕئے‬ ‫رَگٕں كٗ ضٕارٖ جهتٗ ہٕ‬ ‫ِٔ ضبرے ضًے جٕ ثيت گئے‬ ‫ايطے ييں نہٕ كٗ خٕظ ثٕ ضے‬ ‫يم جم كر كتُے ضبل ہٕئے‬ ‫يٍ پٓهٕارٖ يہكب ديُب‬ ‫جہبں جيٌٕ ضر خبيٕظ ہٕ تى‬ ‫يہ ضبل يہيُے دٌ گٓڑیبں‬ ‫آٔاز كے ديپ جال ديُب‬ ‫ہى ضت ضے آگے َكم گئے‬ ‫جت ضچ ثبتٕں پر ہبتٓ كٹيں‬ ‫ہى جيٌٕ رتٓ ييں جڑے ہٕئے‬ ‫تى اپُب ہبتٓ اٹٓب ديُب‬ ‫كجٓی ضُجٓم گئے کجٓی پٓطم گئے‬ ‫جت كٕئٗ َئٗ ديٕار گرے‬ ‫دايٍ ييں صجر كٗ يبيب ہے‬ ‫تى آَچم كٕ نہرا ديُب‬ ‫کچٓ آش اييذ كٗ چٓبيب ہے‬ ‫أر تيرِ غجٗ كے دايٍ ييں‬ ‫ہر راِ ييں كبَٹے پڑے ہٕئے‬ ‫اک ايطٗ آگ نگب ديُب‬ ‫ہر يٕڑ پہ دکٓ ہيں کٓڑے ہٕئے‬ ‫جٕ َئٗ ضحر كٗ آيذ تک‬ ‫تى ثڑے ہٕئے ، تى ثڑے ہٕئے‬ ‫اش دْرتٗ كٗ پيػبَٗ ضے‬ ‫اة نٕرٖ پبش َہيں رہتی‬ ‫تبريكٗ كٕ ثے دخم كرے‬ ‫تًہيں َيُذ كٗ آش َہيں رہتی‬ ‫أر اَذْيبرٔں كٕ قتم كرے‬ ‫۔۔۔۔۔۔‬ ‫ِٔ ضبرے ضًے جٕ ثيت گئے‬ ‫كيب ہبر گئے كيب جيت گئے‬ ‫جتُے دكٓ ضكٓ كے ريهے تٓے‬‫ہى ضت َے يم كر جٓيهے تٓے . . .‬
  • 13. PHOTO CORNER Peace of mind as defined by Iqbal ‫راحت جبٌ ﻃهجی راحت جبٌ چيسی َيطت‬ ‫در غى ْى َفطبٌ اغک رٔاٌ چيسی ْطت‬You seek peace of mind, peace of mind means nothing shedding tears for your fellow beings is something From Saib Tabrizi ‫خبر در پيراٍْ فرزاَّ يیریسیى يب‬ ‫گم ثّ دايٍ ثر ضر دیٕاَّ يیریسیى يب‬ ‫قطرِ گْٕر يیغٕد در دايٍ ثحر کرو‬ ‫آثرٔی خٕیع در ييخبَّ يیریسیى يب‬ We scatter thorns on the dress of intellect And flowers on one driven to madness by love In the ocean of Mercy a drop becomes a pearlHence we rend asunder our ego in the tavern of love
  • 14. FAMILY PHOTOS JAVAID AHMAD ONE OF OUR CRs AMAN KHAN’S SON STARTS MEDICAL STUDIES AT AGA KHAN UNIVERSITY
  • 15. A LOT OF GUYS WITH A FEW EMPTY PLATES Shared by Hassan Ali HabibJuly 2011 St. Louis — with Mehtab Jamali, Sana Aych,Muslim Jami, Michelle Syed, Jawad IjazKhan, Amjad Ali, Jabbar Sorathia, Shehla Lily Hussain, Syed Khurram Raza, FarrukhHashmi and Sakina Ahmed.
  • 16. UMAR FAROOQ IS AWARDED FRCS IN LONDON
  • 17. WITH SYED FAHIM MUKHTAR, UMAR DARAZ AND KHALID SALEEM
  • 18. ABDUL KADIR YOUSUF AND FAUZIA WITH THEIR CHILDREN
  • 19. Kehkashan Qamar shared Positive Inspirational Quotes ( PIQ)s photo.Kehkashan Qamar shared Express Tribunes photo.
  • 20. Dow 85 shares the grief of Mirza Basith Baig who lost his motherin January 2013 SHARED BY KEHKASHAN QAMAR
  • 21. MOTHER‫ووص ْي نَا اْلنْسان بِوالِديْه َحَلَْتهُ أُمهُ وهنًا علَى وهن وفِصالُهُ ِِف عامْي أَن اشكر ِِل‬ ُْ ْ ِ ِْ َ َ ِ َ َ ٍ ْ َ َ ْ َ ُّ َ َ َ َ َ ِْ َّ َ َ ِ ََّ ِ َ َ ِ ِ ُ‫ولوالديْك إِل الْمصي‬ َ ََ ‫سورة لقمان‬And We have enjoined on man (to be good) to his parents: in travail upontravail did his mother bear him, and in years twain was his weaning: (hearthe command), "Show gratitude to Me and to thy parents: to Me is (thyfinal) Goal.
  • 22. ‫ػالهَ اقجبل‬
  • 23. My mother! when I learnd that thou wast dead, Say, wast thou conscious of the tears I shed? Hoverd thy spirit oer thy sorrowing son, Wretch even then, lifes journey just begun?Perhaps thou gavst me, though unseen, a kiss; Perhaps a tear, if souls can weep in bliss-- Ah that maternal smile! it answers--Yes. I heard the bell tolld on thy burial day, I saw the hearse that bore thee slow away, And, turning from my nursry window, drew A long, long sigh, and wept a last adieu!But was it such?--It was.--Where thou art gone Adieus and farewells are a sound unknown. May I but meet thee on that peaceful shore, The parting sound shall pass my lips no more!Thy maidens grievd themselves at my concern, Oft gave me promise of a quick return. What ardently I wishd, I long believd, And, disappointed still, was still deceivd; By disappointment every day beguild, Dupe of to-morrow even from a child. Thus many a sad to-morrow came and went, Till, all my stock of infant sorrow spent, I learnd at last submission to my lot; But, though I less deplord thee, neer forgot.
  • 24. NEW FESTIVE LOOKS, SAME BRIGHT FACES
  • 25. REMEMBER THIS?
  • 26. Shared by Arjumand AsifSHARED BY SHIRIN AHMED
  • 27. The colonel goes to Africa!MUHAMMAD MUNIR DOW 1985
  • 28. ‫‪Shared by Arjumand Asif and Kehkashan Qamar‬‬ ‫وشطی انسناء هيں ايک بزرگ تھے۔۔۔ ملک هيں قخط بڑا ہوا تھا۔۔ چلقت تھوک سے‬ ‫ير رہی تھی۔۔ ايک روز نہ بزرگ اس خنال سے کچھ خريدنے يازار چا رہے تھے کہ نہ ٌعلوم نعد هيں نہ تھی نہ‬ ‫ملے ، يازار هيں اتھوه نے ايک عالم کو ديکھا خو ہنسنا کھنلنا لوگوه سے يزاق کر رہا تھا۔۔‬‫بزرگ ان چاالت هيں عالم کی خرکات ديکھ کر چالل هيں آ گئے۔۔۔ عالم کو شخت سشت کہا کہ لوگ ير رہے‬ ‫ہيں اور بچھے ًسجرياه سودھ رہی ہيں۔۔۔‬ ‫عالم نے بزرگ سے کہا۔۔۔ آپ ہللا والے لگئے ہيں۔۔ کنا آپ کو بہيں پيہ هيں کون ہوه؟‬ ‫بزرگ نولے نو کون ہے؟‬ ‫عالم نے خواب ديا هيں قاله رئنس کا عالم ہوه۔۔ حس کے لنگر سے درخ توه لوگ روزانہ کھايا کھانے ہيں۔۔‬ ‫س‬ ‫کنا آپ مچھئے ہيں کہ خو غيروه کا ،اس قخط شالی هيں پ يٹ تھر رہا ہے ۔۔وہ ا پئے عالم کو تھوکا يرنے دے‬ ‫گا۔۔۔ چائيں آپ اپنا کام کربں آپ کو انسی يائيں ز پب بہيں د پتی۔۔۔‬ ‫بزرگ نے عالم کی يات ستی اور شحدے هيں گر گئے۔۔۔ نولے يا ہللا ىچھ سے نو نہ ان بڑھ عالم يازی لے‬ ‫گنا۔۔۔ اسے ا پئے آقا بر اپنا تھروسہ ہے کہ کوتی عا اسے عا بہيں لگنا۔ اور هيں خو بيری عالمی کا دم تھريا‬ ‫ہوه۔۔ نہ ما پئے ہونے کہ۔۔۔ نو مالک الملک اور ذولحالل والاکرام ہے۔۔ اور ممام کاپنات کا چال اور رازق‬ ‫ہے. هيں کينا کا طرف ہوه کے چاالت کا ابر لے کر يا اوند ہو گنا ہوه۔۔۔ نے شک هيں گناہ گار ہوه اور‬ ‫بچھ سے بيری ردنت مايگنا ہوه اور ا پئے گناہوه کے ٌعاقی مايگنا ہوه۔۔۔‬
  • 29. ‫‪SHARED BY SHAH MOHAMMAD VAQUAS‬‬ ‫هؼبػزے هیں کچِ لْگ تْ ثض یہی طْچ کز ہی پزے ثیٹِ رہتے ہیں کہ ثِال ٍّ ظیي کی کیب‬ ‫ضعهت کز طکتے ہیں؟ اى کے هطبثق یہ ثہت ضزّری ہْتب ہے کہ اى کی لوجی طی ظاڑُی ہْ،‬ ‫ػلْار ٹطٌْں طے اّپز، قزآى ػزیق اگز پْارا ًہیں تْ کچِ تْ ضزّر زلظ ہْ، پبًچْں ًوبسّں کی‬ ‫پبثٌعی ہْ اّر هبتِے پز ایک هسزاة ثٌب ہْا ہْ، خیت هیں تظجیر اّر طز پز ٹْپی ہْ ّؿیزٍ ّؿیزٍ تْ‬ ‫تت خب کز ٍّ کْئی ًیکی کی تجلیؾ کز طکتب ہے۔‬ ‫زقیقت هیں ایظب ًہیں ہے، آپ پز یہ كزیضہ تْ ایظی صْرت هیں ثِی ػبئع ہْتب ہے خت آپ‬ ‫گٌبہگبر ہی کیْں ًب ہْں۔ آپ ػزاة ًْػی کزًے ّالے ہیں تْ کیب ہْا اثِی تک ہوبرے سهزے هیں تْ‬ ‫ہیں ًبں۔ کظی ثہت ثڑی ثزائی هیں هجتال ہیں تْ کیب ہْا اطالم کے ظائزے هیں تْ ہیں ًبں۔ ًوبس‬ ‫کی اظائیگی هیں آپ طے کْتبہی ہْ رہی ہے تْ کیب ہْا ظیي دمحم ملسو ہیلع ہللا یلص طے ضبرج تْ ًہیں ہْ چکے‬ ‫ًبں۔‬ ‫ُ‬ ‫هثبل کے طْر پز اگز ایک ػطص ًؼے هیں ظُت ، ػزاة کی ثْتل ہبتِ هیں تِبهے اّر ثظتز پز‬ ‫طے ؿظل‬ ‫كسبػی کزتے ہْئے هز گیب تْ ٍّ پِز ثِی هظلوبى ہی ہے۔ ہن پز ّاخت ہْگب کہ ہن اُ‬‫ظیں، کلي پہٌب کز اُطکب خٌبسٍ اظا کزیں اّر هظلوبًْں کے قجزطتبى هیں ػزػی طزیقے طے ظكي‬ ‫کزیں ۔ چبہے خْ کچِ ثِی ہْ خبئے ٍّ هظلوبى ہی رہے گب، ایظب ہی ہے ًبں۔ ۔ تْ اص ثبت کْ‬ ‫ظُیبى هیں رکِیئے کہ کہیں ػیطبى آپ کْ اص طزذ ًب ّرؿالئے کہ آپ تْ ایک گٌبہگبر اًظبى ہیں‬ ‫اّر ظیي کی اػبػت یب ظیي کی ضعهت کب آپ طے کْئی تؼلق ًہیں ہے۔‬ ‫اطی طلظلے هیں آج هیزے پظٌعیعٍ ػیص ػزیلی کب طٌبیب ہْا ّاقؼہ آپ کی ًذر ہے، کہتے‬ ‫ہیں کہ هیں ایک ثبر کظی یْرپی هلک طے ّاپض آ رہب تِب۔ لٌعى کے ہیتِزّ ایئز پْرٹ پز ٹزاًشٹ‬ ‫اُتزا، هیزے پبص کچِ کیظٹیں تِیں خْ هیں ہویؼہ لْگْں کْ تسلہ ظیٌے کیلئے اپٌے طبتِ رکِتب‬ ‫ہْں، هیں ًے ّقت گشاری کیلئے یہ کیظٹیں لْگْں کْ ظیٌب ػزّع کیں۔ هیزا طزیقہ کبر ثہت آطبى‬‫طب تِب۔ ػکل ّ صْرت طے ػزثی لگٌے ّالے آظهی کے پبص طے گشرتب اّر اُطے الظالم ػلیکن‬ ‫ُ‬ ‫کہتب۔ اگز ٍّ خْاثب ّ ػلیکن الظالم کہتب تْ هیں اطے ایک کیظٹ تِوب ظیتب، لْگ هیزا ػکزیہ اظا‬ ‫کزتے اّر هیں آگے ثڑُ خبتب۔‬ ‫اص اثٌبء هیں هیزا گشر ّہبں کے هیکڈًّبلڈ ریظٹْرًٹ کے طبهٌے طے ہْا خہبں پز ایک ػْرت‬ ‫ػجبیہ پہٌے کِڑی تِی ۔ ػْرت اپٌی ّضغ قطغ طے ریبض یب اُطکے ًْاذ هیں رہٌے ّالی لگتی‬ ‫تِی کیًْکہ اطکب ػجبیہ ثبلکل ّیظب تِب خیظے ریبض کی ػْرتیں پہٌتی ہیں۔ ثبسّ کی خگہ ایک‬ ‫تٌگ طب طْراش خہبں طے ضزّرتب ہبتِ ًکبال خبتب ہے۔ اص ػْرت کے پبص ایک ٹزالی پز طبهبى‬ ‫رکِب ہْا تِب اّر ٹزالی پز ایک پبًچ یب چِ طبل کی ثچی ثِی ثیٹِی ہْئی تِی۔ ریظٹْرًٹ هیں‬ ‫رع کی ّخہ طے اص ػْرت کی ظّطزی ثیٹی اًعر خب کز کچِ ضزیع رہی تِی اّر یہ ظًّْں ثبہز‬ ‫اًتظبر کز رہے تِے۔‬ ‫هیں ًے ّہبں طے گشرتے ہْئے اى کْ طالم کیب اّر ثچی کی طزف ایک کیظٹ ثڑُبئی اّر کہب،‬‫ثیٹی یہ هیزی طزف طے تسلہ لے لْ۔ ثچی ًے ہًْقْں کی طزذ هیزے هٌہ کْ ظیکِب، صبف لگ رہب‬‫تِب کہ ثچی کْ هیزی ثبت طودِ ًہیں آئی۔ اص ثبر هیں ًے هظکزاتے ہْئے ظّثبرٍ سّر طے ثچی‬ ‫کْ کہب یہ کیظٹ لے لْ، یہ توہبرے لیئے تسلہ ہے هگز ثچی ًے اثِی ثِی کچِ ًب طودِب اّر‬ ‫هیزی طزف ہبتِ ًب ثڑُبیب۔ تبہن اص اثٌبء هیں ثچی کی هبں ًے ثچی کْ آًکِ طے کیظٹ لے‬ ‫لیٌے کب اػبرٍ کیب اّر هدِے ٹِیٹِ اًگزیشی لہدے هیں تِیٌک یْ ّیزی هچ کہب۔ هدِے اُص کے‬ ‫تِیٌک یْ ّیزی هچ کہٌے طے زیزت تْ ہْئی هگز هیں ًے طْچب کہ یہ ہوبری ثہي اگز لٌعى هیں‬ ‫رہتی ہے تْ ضیز طے اطکب اتٌب زق تْ ثٌتب ہی ہے کہ یہبں کے اہل سثبى کی کچِ اقعار کب پبص‬ ‫رکِے اّر اُى کی سثبى کْ اًہی کے اًعاس هیں اپٌبئے۔ کیظٹ ظے کز هیں آگے ثڑُ گیب اّر ثبت آئی‬ ‫گئی ہْ گئی۔‬ ‫خہبس هیں طْار ہْ کزهیں ریبض آ گیب۔ ایئزپْرٹ پز هیزا ظّطت طؼْظ هدِے لیٌے کیلئے اًتظبر کز‬ ‫رہب تِب خْ ایئزالئي کب هالسم ثِی ہے۔ طؼْظ هدِ طے پہلے ایک طلیع كبم هگز طیٌے تک آئی‬
  • 30. ‫ہْئی ظاڑُی ّالے ػطص کے طبتِ کِڑا ہْا ثبتیں کز رہب تِب۔ هدِے آتب ظیکِ کز اُص طے‬ ‫هصبكسہ کز کے هیزے پبص آگیب، هدِے هل کز هیزا زبل ازْال پْچِ ہی رہب تِب کہ هدِے ّہی‬ ‫ػْرت اپٌی ظًّْں ثیٹیْں کے طبتِ آتی ظکِبئی ظی خٌہیں هیں لٌعى کے ایئزپْرٹ پز ظیکِ چکب‬‫تِب، هدِے قطؼی اًعاسٍ ًہیں تِب کہ یہ لْگ ثِی هیزے طبتِ ہی ایک ہی خہبس هیں آئے تِے یب‬ ‫اًہْں ًے ثِی ریبض ہی آًب تِب۔ اى لْگْں کْ لیٌے کیلئےّہی طلیع كبم آگے ثڑُب خْ کچِ ظیز‬ ‫پہلے طؼْظ کے طبتِ کِڑا ہْا ثبتیں کز رہب تِب۔ هیں ًے زیزت کے طبتِ پْچِب طؼْظ، یہ کْى‬ ‫لْگ ہیں؟ طؼْظ ًے کہب یہ آظهی اهزیکی ہے اّر ایک پزائیْیٹ ہظپتبل هیں طپیؼلظٹ ڈاکٹز‬ ‫ہے۔ خجکہ یہ ػْرت اًگلیٌڈ طے ہے اّر اص اهزیکی کی ثیْی ہے ، ظًّْں ثچیبں اى کی ثیٹیبں‬ ‫ہیں اّر یہ طت لْگ ًْ هظلن ہیں، اص طلیع كبم ًے اپٌی ثیْی اّر ثچْں کْ طبتِ لیب اّر‬ ‫طبهبى لیٌے کیلئے آگے ثڑُ گیب۔‬ ‫طؼْظ ًے هدِ طے طْال کیب کہ ػزیلی صبزت کیب آپ خبًتے ہیں کہ یہ لْگ کض کے ہبتِْں‬‫هظلوبى ہْئے ہیں؟ هیں ًے کہب یقیٌی ثبت ہے کہ یہ لْگ اص هضجْطی طے ظیي پز قبئن، پزظے‬ ‫کی پبثٌع ثیْی اّر ػزع کب پبثٌع ضبًّع، یہ اہن اّر پڑُے لکِے لْگ کظی ثہت ثڑے ػبى اّر‬‫تْقیز ّالے ػبلن ظیي کے ہبتِْں ہی هظلوبى ہْئے ہًْگے۔ طؼْظ ًے کہب ًہیں، ایظب ًہیں ہے۔ اى‬‫لْگْں ًے ایک طْڈاًی هیل ًزص کے ہبتِْں اطالم قجْل کیب ہے خْ کہ اى کے طبتِ ہی ہظپتبل‬ ‫هیں کبم کزتب ہے۔ اص طْڈاًی کی ًب ظاڑُی ہے اّر ًب هًْچِیں، طگزیٹ کے ثـیز ایک لوسہ ًب‬ ‫گشار پبئے اّر اص کے ہًْٹ طگزیٹ پی پی کز خلے ہْئے ہیں۔ کْئی ظیکِے تْ کہے کہ اص‬ ‫ػطص طے اطالم کْ کیب كبئعٍ پہٌچے گب هگز یہ ظیي کی اػبػت اّر ضعهت کیلئے ہوہ ّقت‬ ‫تیبر ایک هتسزک ظاػی ہے ۔ یہ طت کچِ طي کز هیں زظزت طے صزف طجسبى ہللا ہی کہہ‬ ‫پبیب۔‬ ‫خی، ایک لوسے کْ طْچٌے کی ثبت ہے کہ اگز یہ کیلیت آپ کے طبتِ ہْ تْ ػیطبى ضزّر آپ‬ ‫کْ کہے گب کہ هیبں تن ٹِہزے ایک ًؼئی، ظاڑُی کْ تن هًْڈتے ہْ، ػجبہت توہبری اطالهی‬ ‫ًہیں ہے، لجبص توہبرا ػزػی ًہیں ہے ، تن کْ کیب پڑی ہے اطالم طے، خبؤ پہلے اپٌے آپ کْ‬ ‫ظرطت کزّ اّر پِز ظّطزّں کْ ظرطت کزًے کی طْچْ۔ اگز آپ ػیطبى کی اص هٌطق پز چل‬ ‫پڑے تْ پِز کیظے ظیي کب یہ طلظلہ آگے ثڑُے گب۔ هیں یہبں پز یہ ّضبزت کز ظّں کہ هیں‬ ‫ثزائیْں کی زوبیت ًہیں کز رہب اّر ًب ہی گٌبہْں طے هسجت کْ كزّؽ ظے رہب ہْں هگز اى طت‬‫طے اہن کبم کی زْصلہ اكشائی کز رہب ہْں کہ ہویں اپٌی هقعّر ثِز کْػغ کزتے ہْئے ظیي کی‬ ‫تزّیح هیں اپٌب زصہ ضزّر ڈالٌب چبہیئے‬ ‫‪Shared by Sarah Chaudhary‬‬
  • 31. Shared by Sam Khan“Good friends, good books, and a sleepy conscience: this is the ideal life.”― Mark Twain FARRUKH HASHMI AND HIS DAUGHTER MARIYAM HAPPY BIRTHDAY TO HER FROM ALL UNCLES AND AUNTS