Hubbe Duniyan

1,073 views
1,002 views

Published on

0 Comments
1 Like
Statistics
Notes
  • Be the first to comment

No Downloads
Views
Total views
1,073
On SlideShare
0
From Embeds
0
Number of Embeds
0
Actions
Shares
0
Downloads
0
Comments
0
Likes
1
Embeds 0
No embeds

No notes for slide

Hubbe Duniyan

  1. 1. حُبِّ دنیا
  2. 8. دنیاکیحقیقتقرآنکیروشنیمیں۔  قلیلاورادنیٰہونا
  3. 9. سورۃ الحدید : ۲۰ اعْلَمُوا أَنَّمَا الْحَيَاةُ الدُّنْيَا لَعِبٌ وَلَهْوٌ وَزِينَةٌ وَتَفَاخُرٌ بَيْنَكُمْ وَتَكَاثُرٌ فِي الْأَمْوَالِ وَالْأَوْلَادِ كَمَثَلِ غَيْثٍ أَعْجَبَ الْكُفَّارَ نَبَاتُهُ ثُمَّ يَهِيجُ فَتَرَاهُ مُصْفَرًّا ثُمَّ يَكُونُ حُطَامًا وَفِي الْآخِرَةِ عَذَابٌ شَدِيدٌ وَمَغْفِرَةٌ مِّنَ اللَّهِ وَرِضْوَانٌ وَمَا الْحَيَاةُ الدُّنْيَا إِلَّا مَتَاعُ الْغُرُورِ
  4. 10. جان رکھو کہ دنیا کی زندگی محض کھیل اور تماشا اور زینت ( وآرائش ) اور تمہارے آپس میں فخر ( وستائش ) اور مال واولاد کی ایک دوسرے سے زیادہ طلب ( وخواہش ) ہے ( اس کی مثال ایسی ہے ) جیسے بارش کہ ( اس سے کھیتی اُگتی اور ) کسانوں کو کھیتی بھلی لگتی ہے پھر وہ خوب زور پر آتی ہے پھر ( اے دیکھنے والے ) تو اس کو دیکھتا ہے کہ ( پک کر ) زرد پڑ جاتی ہے پھر چورا چورا ہوجاتی ہے اور آخرت میں ( کافروں کے لئے ) عذاب شدید اور ( مومنوں کے لئے ) اللہ کی طرف سے بخشش اور خوشنودی ہے۔ اور دنیا کی زندگی تو دھوکے کا سامان ہے۔ سورۃ الحدید ۲۰
  5. 11. <ul><li>What we see is not reality </li></ul><ul><li>The real truth is unseen </li></ul><ul><li>(Unanimous philosopher) </li></ul><ul><li>The reality of colors </li></ul><ul><li>Process of Vision </li></ul><ul><li>Every thing is made up of Atoms & Molecules </li></ul>
  6. 12. قُلْمَتَاعُالدَّنْيَاقَلِيلٌوَالآخِرَةُخَيْرٌلِّمَنِاتَّقَىوَلاَتُظْلَمُونَفَتِيلاً ( النساء ۷۷ ) کہہ دو برتنے کا سامان ( فائدہ ) دنیا کا بہت تھوڑا ہے اور آخرت بہت اچھی چیز ہے پرہیزگار وں کے لئے اور تم پر دھاگے برابر بھی ظلم نہیں کیا جائے گا ۔
  7. 13. فَمَا مَتَاعُ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا فِي الآخِرَةِ إِلاَّ قَلِيلٌ ( التوبہ ۳۸ ) دنیا کی زندگی کا برتنے کا سامان تو آخرت کے مقابل بہت ہی تھوڑا ہے ۔
  8. 14. إَنَّ الَّذِينَ لاَ يَرْجُونَ لِقَاء َ نَا وَرَضُواْ بِالْحَياةِ الدُّنْيَا وَاطْمَأَنُّواْ بِهَا ۔ وَالَّذِينَ هُمْ عَنْ آيَاتِنَا غَافِلُونَ ۔ أُوْلَـئِكَ مَأْوَاهُمُ النُّارُ بِمَا كَانُواْ يَكْسِبُونَ ۔ ( یونس ۷ ۔ ۸ ) جن لوگوں کو ہم سے ملنے کی توقع نہیں تھی اور دنیا کی زندگی پر ہی راضی رہے اور اسی پر مطمئن ہو ئے بیٹھے رہے اور ہماری آیتوں سے غافل رہے۔ ان کا ٹھکانہ دوزخ ہے ان ( اعمال ) کے سبب جو وہ کرتے ہیں ۔
  9. 15. بُرجدبئی
  10. 16. يَا أَيُّهَا النَّاسُ إِنَّمَا بَغْيُكُمْ عَلىٰ أَنفُسِكُم مَّتَاعَ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا ثُمَّ إِلَينَا مَرْجِعُكُمْ فَنُنَبِّئُكُم بِمَا كُنتُمْ تَعْمَلُونَ ( یونس ۲۳ ) لوگو ! تمہاری گناہوں کا وبال تمہاری ہی جانوں پر ہوگا اور یہ سامان ہے دنیا کی زندگی ک ا تھوڑا ۔ پھر تم کو ہمارے پاس لوٹ کر آنا ہے۔ ہم تم کو بتائیں گے جو کچھ تم کیا کرتے تھے۔
  11. 17. اللّهُ يَبْسُطُ الر ِ ّزْقَ لِمَنْ يَشَاء ُ وَيَقدِرُ ۔ وَفَرِحُواْ بِالْحَيَاةِ الدُّنْيَا وَمَا الْحَيَاةُ الدُّنْيَا فِي الآخِرَةِ إِلاَّ مَتَاعٌ ( الرعد ۲۶ ) اللہ جس کا چاہتا ہے رزق فراخ کر دیتا ہے اور ( جس کا چاہتا ہے ) تنگ کر دیتا ہے۔ اور ( کافر لوگ ) دنیا کی زندگی پر خوش ہو رہے ہیں اور دنیا کی زندگی آخرت ( کے مقابلے ) میں ( بہت ) تھوڑا ہے سامان ۔
  12. 18. وَاضْرِبْ لَهُم مَّثَلَ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا كَمَاء َ أَنزَلْنَاهُ مِنَ السَّمَاء فَاخْتَلَطَ بِهِ نَبَاتُ الْأَرْضِ فَأَصْبَحَ هَشِيمًا تَذْرُوهُ الرِّيَاحُ ۔ وَكَانَ اللَّهُ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ مُّقْتَدِرًا ( الکھف ۴۵ ) اور بیان کرتا ہے ( اللہ ) ان سے دنیا کی زندگی کی مثال ( وہ ایسی ہے ) جیسے نازل کیا ہم نے آسمان سے پانی ۔ تو خوب گنی ہوئی اس کی وجہ سے نباتات زمین کی ۔ پھر وہ چورا چورا ہوگئی کہ ہوائیں اسے اڑاتی پھرتی ہ یں ۔ اور اللہ تو ہر چیز پر قدرت رکھتا ہے
  13. 19. ا َ لْمَالُ وَالْبَنُونَ زِينَةُ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا وَالْبَاقِيَاتُ الصَّ الِح َاتُ خَيْرٌ عِندَ رَبِّكَ ثَوَابًا و ّ َ خَيْرٌ اَ مَلًا ( الکھف ۴۶ ) مال اور بیٹے تو دنیا کی زندگی کی زینت ہیں۔ اور باقی رہنے والی ہیں نیکیاں جو ثواب کے لحاظ سے تمہارے پروردگار کے ہاں اچھی اور امید کے لحاظ سے بہت بہتر ہیں۔
  14. 20. وَلَا تَمُدَّنَّ عَيْنَيْكَ اِ لى ٰ مَا مَتَّعْنَا بِهِ ِ ا َزْوَاجًا م ِّ نْهُمْ زَهْرَةَ الْحَيَاةِ الدُّنيَا لِنَفْتِنَهُمْ فِيه ِ وَرِزْقُ رَ بِّ كَ خَيْرٌ و ّ َ اَ بْقى ٰ ۔ ( طہ ۱۳۱ ) اور تم ان پر ہرگز نگاہ نہ کرنا ، جن کو ہم نے دنیا کی زندگی میں آرائش کی چیزیں دیں ہیں وہ اس لئے ہیں کہ ہم ان ہیں آزمائیں ان سے ۔ اور تمہار ے پروردگار کی ( عطا فرمائی ہوئی آخرت کی ) روزی بہت بہتر اور باقی رہنے والی ہے ۔
  15. 21. وَمَا ا ُوتِيتُم مِّن شَيْءٍ فَمَتَاعُ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا وَزِينَتُهَا وَمَا عِندَ اللَّهِ خَيْرٌ وَأَبْقَى ا َفَلَا تَعْقِلُونَ ( القصص ۶۰ ) اور دی گئی ہے جو چیز تم کو وہ دنیا کی زندگی برتنے کا سامان ہے اور اس کی زینت ہے۔ اور جو اللہ کے پاس ہے وہ بہتر اور باقی رہنے والی ہے۔ کیا تم سمجھتے نہیں؟
  16. 22. وَمَا ه ٰ ذِهِ الْحَيَاةُ الدُّنْيَا إِلَّا لَهْوٌ وَلَعِبٌ وَ اِ نَّ الدَّارَ الْآخِرَةَ لَهِيَ الْحَيَوَانُ لَوْ كَانُوا يَعْلَمُونَ ( العنکبوت ۶۴ ) اور یہ دنیا کی زندگی تو صرف کھیل اور تماشہ ہے اور ( ہمیشہ کی ) زندگی ( کا مقام ) تو آخرت کا گھر ہے۔ کاش یہ ( لوگ ) سمجھتے ۔
  17. 23. فَأَمَّا مَن طَغَى ٰ ۔ وَآثَرَ الْحَيَاةَ الدُّنْيَا ۔ فَإِنَّ الْجَحِيمَ هِيَ الْمَأْوَى ٰ ۔ ( النازعات ۳۷۔۳۹ ) تو جس نے سرکشی کی ۔ اور مقدم سمجھا دنیا کی زندگی کو ۔ تو جہنم ہی اس کا ٹھکانہ ہے ۔
  18. 24. مَا عِندَكُمْ يَنفَدُ وَمَا عِندَ اللّهِ بَاقٍ ط ( النّحل ۹۶ ) جو کچھ تمہارے پاس ہے وہ ختم ہو جائے گا اور جو اللہ کے پاس ہے وہ باقی ر ہے گا ( کبھی ختم نہیں ہوگا ) ۔
  19. 25. ا َلْهَاكُمُ التَّكَاثُرُ ۔ حَتَّى زُرْتُمُ الْمَقَابِرَ ۔ ( التکاثر ۱ ۔ ۲ ) ( لوگو ) تم غفلت میں پڑے ہوئے ہو ( مال کی ) کثرت کی طلب میں ۔ یہاں تک کہ دیکھ لیتے ہو قبریں ۔
  20. 26. قرآن کی روشنی میں شناعت
  21. 27. مَن كَانَ يُرِيدُ حَرْثَ الْآخِرَةِ نَزِدْ لَهُ فِي حَرْثِهِ ۔ وَمَن كَانَ يُرِيدُ حَرْثَ الدُّنْيَا نُؤتِهِ مِنْهَا ۔ وَمَا لَهُ فِي الْآخِرَةِ مِن نَّصِيبٍ ( الشوریٰ ۲۰ ) جو ہوا حسرت کرنے والا آخرت کی ت و ہم دے دیں گے اسے اس میں سے۔ اور جو ہوا حسرت کرنے والا دنیا کا ت و ہم اس کو دے دیں گے اس میں سے ۔ اور اس کا آخرت میں کچھ حصہ نہ ہوگا ۔
  22. 28. الَّذِينَ اتَّخَذُواْ دِينَهُمْ لَهْوًا وَلَعِبًا وَغَرَّتْهُمُ الْحَيَاةُ الدُّنْيَا فَالْيَوْمَ نَنسَاهُمْ كَمَا نَسُواْ لِقَ آ ء َ يَوْمِهِمْ ه ٰ ـذَا وَمَا كَانُواْ بِآيَاتِنَا يَجْحَدُونَ ( الاعراف ۵۱ ) جنہوں نے اپنے دین کو تماشا اور کھیل بنا رکھا تھا اور دنیا کی زندگی نے ان کو دھوکے میں ڈال رکھا تھا۔ تو جس طرح یہ لوگ اس دن ک ی پیشی کو بھولے رہ ے تھے اسی طرح ہم بھی آج انہیں بھلا دیں گے اور وہ تھے ہماری آیتوں سے منکر۔
  23. 29. الَّذِينَ يَسْتَحِبُّونَ الْحَيَاةَ الدُّنْيَا عَلَى الآخِرَةِ وَيَصُدُّونَ عَن سَبِيلِ اللّهِ وَيَبْغُونَهَا عِوَجًا أُوْلَـئِكَ فِي ضَلاَلٍ بَعِيدٍ ( ابراھیم ۳ ) وہ لوگ جو محبت کرتے ہیں دنیا کی زندگی کو اور روکتے ہیں ( لوگوں کو ) اللہ کے رستے سے اور اس میں کجی چاہتے ہیں۔ یہ لوگ پڑے ہوئے ہیں پرلے سرے کی گمراہی میں ۔
  24. 30. قُلْ هَلْ نُنَبِّئُكُمْ بِالْأَخْسَرِينَ أَعْمَالًا الَّذِينَ ضَلَّ سَعْيُهُمْ فِي الْحَيَاةِ الدُّنْيَا وَهُمْ يَحْسَبُونَ اَ نَّهُمْ يُحْسِنُونَ صُنْعًا ( الکھف ۱۰۳ ۴ ۱۰ ) کہہ دو ک یا ہم تمہیں بتائیں جو پڑے ہوئے ہیں بڑے خسارے میں اعمال کے لحاظ سے ۔ وہ لوگ جن کی سعی / کوشش دنیا کی زندگی میں برباد ہو کر رہ گئی اور وہ یہ سمجھ ت ے رہے کہ وہ اچھے کام کر رہے ہیں ۔
  25. 31. وَمَن كَانَ فِي هَـذِهِِ أَعْمَى ٰ فَهُوَ فِي الآخِرَةِ أَعْمَى وَأَضَلُّ سَبِيلاً ( بنی اسرائیل ۷۲ ) اور جو ( شخص ) اس ( دنیا ) میں اندھا ہو ا رہا وہ آخرت میں بھی اندھا اٹھایا جائے گا ۔ اور وہ ( نجات کے ) رستے سے بہت دور ہوگا۔
  26. 32. وَمَنْ أَعْرَضَ عَن ذِكْرِي فَإِنَّ لَهُ مَعِيشَةً ضَنكًا وَنَحْشُرُهُ يَوْمَ الْقِيَامَةِ أَعْمَى ٰ ۔ ( طٰہٰ ۱۲۴ ) قَالَ رَبِّ لِمَ حَشَرْتَنِي أَعْمَى ٰ وَقَدْ كُنتُ بَصِيرًا ۔ ( ۱۲۵ ) قَالَ كَذَلِكَ ا َتَتْكَ آيَاتُنَا فَنَسِيتَهَا وَكَذَلِكَ الْيَوْمَ تُنسَى ٰ ۔ ( ۱۲۶ ) وَكَذَلِكَ نَجْزِي مَنْ ا َسْرَفَ وَلَمْ يُؤْمِن بِآيَاتِ رَبِّهِ وَلَعَذَابُ الْآخِرَةِ أَشَدُّ و ّ َأَبْقَى ۔ ( طٰہٰ ۱۲۷ )
  27. 33. قرآن کی روشنی میں مدتِ دنیا
  28. 34. كَأَنَّهُمْ يَوْمَ يَرَوْنَهَا لَمْ يَلْبَثُوا إِلَّا عَشِيَّةً ا َوْ ضُحَاهَا ۔ ( النازعات ۴۶ ) جب وہ قیامت کے دن دیکھیں گے اس کو ( دنیا کی زندگی کو تو خیال کریں گے ) کہ نہیں رہے گویا ( دنیا میں صرف ) ایک شام یا ایک صبح ۔
  29. 35. وَيَوْمَ تَقُومُ السَّاعَةُ يُقْسِمُ الْمُجْرِمُونَ مَا لَبِثُوا غَيْرَ سَاعَةٍ كَذَلِكَ كَانُوا يُؤْفَكُونَ ( الروم ۵۵ ) اور جس روز قائم ہوگی قیامت تو وہ قسمیں کھائیں گے گناہگار کہ نہیں رہے وہ ( دنیا میں ) مگر ایک گھڑی سے زیادہ۔ اسی طرح وہ تھے ( رستے سے ) اُلٹے جاتے تھے ۔
  30. 36. قرآن کی دنیا کے بارے میں تلقین
  31. 37. أَحَسِبَ النَّاسُ أَن يُتْرَكُوا أَن يَقُولُوا آمَنَّا وَهُمْ لَا يُفْتَنُونَ ۔ ( ۲ : ۲۹ ) کیا لوگ یہ خیال کئے ہوئے ہیں کہ صرف یہ کہنے سے کہ ہم ایمان لے آئے چھوڑ دیئے جائیں گے اور اُن کی آزمائش نہیں کی جائے گی ۔
  32. 38. جَعَلْنَا مَا عَلَى الْأَرْضِ زِينَةً لَّهَا لِنَبْلُوَهُمْ أَيُّهُمْ أَحْسَنُ عَمَلًا ۔ ( ۷ : ۱۸ ) جو چیز زمین پر ہے ہم نے اس کو زمین کے لئے آرائش بنایا ہے تاکہ لوگوں کی آزمائش کریں کہ ان میں کون اچھے عمل کرنے والا ہے ۔
  33. 39. وَأَمَّا مَنْ خَافَ مَقَامَ رَبِّهِِ وَنَهَى النَّفْسَ عَنِ الْهَوَى ۔ فَإِنَّ الْجَنَّةَ هِيَ الْمَأْوَى ۔ ( النازعات ۴۰ ۔ ۴۱ ) اور جو اپنے پروردگار کے سامنے کھڑے ہونے سے ڈرتا رہا اور روکے رکھا آپنے نفس کو جی کی پیروی سے۔ تو اس کا ٹھکانہ جنت ہے ۔
  34. 40. وَاصْبِرْ نَفْسَكَ مَعَ الَّذِينَ يَدْعُونَ رَبَّهُم بِالْغَدَاةِ وَالْعَشِيِّ يُرِيدُونَ وَجْهَهُ وَلَا تَعْدُ عَيْنَاكَ عَنْهُمْ تُرِيدُ زِينَةَ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا وَلَا تُطِعْ مَنْ أَغْفَلْنَا قَلْبَهُ عَن ذِكْرِنَا وَاتَّبَعَ هَوَاهُ وَكَانَ أَمْرُهُ فُرُطًا ۔ ( الکھف ۲۸ )
  35. 41. صبر کرو اور ان لوگوں کے ساتھ رہو جو صبح و شام اپنے پروردگار کو پکارتے اور اس کی خوشنودی کے طالب گار ہیں۔ اور اپنی نگاہیں ان کی طرف مت ڈالوک ہ تم دینا کی زندگانی کی ارائش کے خواستگار ہوجاؤ۔ اور جس شخص کے دل کو ہم نے اپنی یاد سے غافل کردیا ہے اور وہ اپنی خواہش کی پیروی کرتا ہے اور اس کا کہا نہ ماننا اس کا کام تو حد سے بڑھ ا ہوا ہے ۔
  36. 42. لاَ تَمُدَّنَّ عَيْنَيْكَ ا ِلَى ٰ مَا مَتَّعْنَا بِهِ ا َزْوَاجًا م ِّ نْهُمْ وَلاَ تَحْزَنْ عَلَيْهِمْ وَاخْفِضْ جَنَاحَكَ لِلْمُؤْمِنِينَ ۔ ( الحجر ۸۸ ) ہرگز نہ آنکھ اٹھا کر دیکھنا تم اس کی طرف ( رغبت سے ) جو برتنے کا سامان دیا ہم نے ( دنیاں میں ) ( کافروں کو ) اور ان کے گروہوں کو اور نہ ان کے حال پر غم کرنا اور شفقت سے پیش آنا مومنوں سے ۔
  37. 43. يَا ا َيُّهَا النَّاسُ اَ نَّ وَعْدَ اللَّهِ حَقٌّ فَلَا تَغُرَّنَّكُمُ الْحَيَاةُ الدُّنْيَا وَلَا يَغُرَّنَّكُم بِاللَّهِ الْغَرُورُ ( فاطر ۵ ) لوگو اللہ کا وعدہ سچا ہے۔ تو نہ ڈال دے دھوکے میں تم کو دنیا کی زندگی ۔ اور نہ دھوکے میں ڈال دے تم کو اللہ کے بارے میں سب سے بڑا دھوکے باز ( شیطان ) ۔
  38. 44. إِنَّمَا أَمْوَالُكُمْ وَأَوْلَادُكُمْ فِتْنَةٌ وَاللَّهُ عِندَهُ أَجْرٌ عَظِيمٌ ۔ ( التغابن ۱۵ ) تمہارا مال اور تمہاری اولاد تو آزمائش ہے۔ اور اللہ کے ہاں بڑا اجر ہے ۔
  39. 45. فَاتَّقُوا اللَّهَ مَا اسْتَطَعْتُمْ وَاسْمَعُوا وَأَطِيعُوا وَأَنفِقُوا خَيْرًا لِّأَنفُسِكُمْ وَمَن ي ّ ُوقَ شُحَّ نَفْسِهِ فَأُوْلَئِكَ هُمُ الْمُفْلِحُونَ ( التغابن ۱۶ ) سو ڈرتے رہو اللہ سے جہاں تک تمہاری استطاعت میں ہو ۔ اور سنو اور اطاعت کرو اور خرچ کرو یہ بہتر ہے تمہارے حق میں۔ اور جو بچا لئے گئے اپنے نفس کی لالچ سے سو وہی ہیں درحقیقت فلح پانے والے۔
  40. 46. تمثیلات احادیث کی روشنی میں
  41. 47. <ul><li>بکری کی مثال ( مسلم ) </li></ul><ul><li>مچھر کے پر کے برابر ( ترمزی ) </li></ul><ul><li>انسان کا کھانا ( ابن حبان ) </li></ul><ul><li>قبر تک تین ساتھی ( مسلم ) </li></ul><ul><li>میرا مال ( مسلم ) </li></ul><ul><li>ملعون ( ترمزی ) </li></ul><ul><li>دنیا رنگین ( مسلم ) </li></ul><ul><li>الدنیا سجن المؤمن ( مسلم ) </li></ul>
  42. 48. <ul><li>مدت </li></ul><ul><li>انگلی سمندر میں دال کر ( مسلم ) </li></ul><ul><li>ایک غوطہ ( مسلم ) </li></ul>
  43. 49. <ul><li>مذمّت </li></ul><ul><li>فتنہ امت مال ( بخاری ) </li></ul><ul><li>میں تم پر فکر سے نہیں ڈرتا ( متفق علیہ ) </li></ul><ul><li>قوموں کے حملے ( ابو داؤد ) </li></ul><ul><li>دنیا سے محبت آخرت کا نقصان ( احمد ) </li></ul><ul><li>اللہ کا دنیا چاہنے والے کو چار باتوں میں مبتلا کرنا۔ رنج، شغل، فقر، امل </li></ul>
  44. 50. <ul><li>آپ ﷺ </li></ul><ul><li>میرا دنیا سے کیا واسطہ ( ترمزی ) </li></ul><ul><li>نشانات دیکھے ( بخاری ) </li></ul>
  45. 51. تمام برائیوں کی جڑ حّب دنیا
  46. 52. <ul><li>حرص </li></ul><ul><li>حسد </li></ul><ul><li>لالچ </li></ul><ul><li>تکبر </li></ul><ul><li>نفاق </li></ul><ul><li>حقوق اللہ کی پامالی </li></ul><ul><li>حقوق العباد کی پامالی </li></ul><ul><li>مال و دولت کی محبت </li></ul><ul><li>جھوٹ </li></ul><ul><li>جھوٹی قسمیں </li></ul><ul><li>بخل </li></ul><ul><li>تحقیر کرنا </li></ul><ul><li>چوری </li></ul><ul><li>ڈاکہ </li></ul><ul><li>خیانت </li></ul><ul><li>ناپ تول میں کمی </li></ul><ul><li>دھوکہ </li></ul><ul><li>ظلم </li></ul><ul><li>سازش </li></ul><ul><li>وغیرہ وغیرہ </li></ul>
  47. 53. کیا کریں کشتی کی مثال
  48. 54. جزاکم اللہ خیر

×